.

وزارت انصاف کے 18 شعبے حجاج و معتمرین کی خدمت پر مامور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے دیگر محکموں کے ساتھ وزات قانون و انصاف بھی زائرین بیت اللہ کی خدمت میں ہمہ وقت مصروف عمل ہے۔ محکمہ انصاف کی جانب سے کہا گیا ہے کہ رواں موسم حج کے موقع پرعازمین حج کی خدمت کے لیے وزارت انصاف کے 18 ذیلی شعبے چوبیس گھنٹے کی بنیاد پر اپنی خدمات مہیا کریں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق وزارت انصاف کے سیکرٹری ڈاکٹر احمد عبدالعزیز العمیرہ نے اپنے ایک بیان میں بتایا ہے کہ محکمہ انصاف کے تمام ذیلی شعبے حجاج ومعتمرین کی خدمت میں سرگرم عمل ہیں۔ رواں موسم حج کے موقع پر محکمہ انصاف کی جانب سے حجاج کرام کی مکہ مکرمہ کی حدود کے اندر اور مدینہ منورہ میں قیام کے دوران آمد ورفت کے دوران انہیں ہر ممکن قانونی رہ نمائی اور مدد فراہم کی جائے گی۔ محکمہ انصاف کے ڈیڑھ درجن اداروں کی ٹیمیں مشاعر مقدسہ[منیٰ اور عرفات] میں چوبیس گھنٹے کی بنیاد پر موجود رہیں گی جو حجاج کرام کی جانب سے قربانی کے جانوروں کے حصول اور ان کی نیابت میں قربانی کا اہتمام کرنے کے ساتھ ساتھ فوت ہونے والے حجاج کرام کے سامان کی حفاظت، حجاج کی امانتوں کی حفاظت اور گم یا چوری ہونے والے سامان کی تلاش میں ان کی معاونت کریں گی۔

سیکیورٹی حکام کی طرح محکمہ انصاف کی موبائل ٹیمیں حجاج کرام کےساتھ ساتھ سفر کریں گی۔ اس دوران عازمین حج کو درپیش قانونی مشکلات کے فوری حل میں ان کی مدد اور رہ نمائی کے ساتھ انتظامی امور میں بھی معاونت کریں گی۔

ڈاکٹر العمیرہ کا کہنا تھا کہ محکمہ انصاف کی جانب سے 18 ذیلی شعبوں کی ٹیموں کو حجاج کرام کی رہ نمائی کے لیے متحرک کر دیا گیا ہے۔ اس ضمن میں بیت المال کے 26 ملازمین کو چوبیس گھنٹے کی بنیاد پر حجاج کو سہولیات فراہم کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ ذیلی شعبوں کی ٹیمیں حجاج کے سامان کی گم شدگی کی صورت میں اس کی تلاش، سامان کے چوری ہونے پر ڈھونڈنے میں مدد دینے، ہنگامی ضروریات کے پیش نظر ان کی ضروریات پوری کرنے، کسی مجرمانہ سرگرمی کا موقع پر قانونی نوٹس لینے اور حجاج کو قانونی تحفظ مہیا کرنے اور حجاج کو ان کے متعلقہ مراکز اور قیام گاہوں تک پہنچانے میں مدد مہیا کریں گے۔

محکمہ انصاف نے حرم مکی شریف میں پانچ عدالتی مراکز قائم کیے ہیں جب کہ چھٹا مرکز المعیصم، ساتواں وادی العقبہ میں جمرہ عقبہ،آٹھواں وسطیٰ منیٰ، نواں مناں میں الخیف کے مقام پر قائم کیا جائے گا۔