یورپ میں دہشت گردی بلا جواز نہیں : حزب اللہ کے بانی رکن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شیعہ مرجع تقلید اور لبنانی تنظیم "حزب اللہ" کے ایک سابق رہ نما اور اہم بانی رکن علامہ عفیف النابلسی کا کہنا ہے کہ "اگر یورپ ایک غیرجانب دار براعظم ہے اور یورپی حکومتوں کی جانب سے ہمارے عوام کے لیے بھلائی اور امن کے سوا کچھ نہیں آتا تو پھر وہاں دہشت گردی کی کیا وجہ ہے ؟"

یہ بات شامی حکومت کے ہمنوا لبنانی اخبار "البناء" میں ہفتے کے روز شائع ہونے والے ایک مضمون میں سامنے آئی ہے۔

حزب اللہ کے سابق رہ نما نے یورپ کے براعظم پر دہشت گردی کی سرپرستی کا الزام عائد کیا۔ یہ واضح طور پر اُن کارروائیوں کے لیے غیرمسبوق نوعیت کی اشتعال انگیزی ہے جن کی اسلامی دنیا ، عرب دنیا اور عالمی برادری کی جانب سے بھرپور مذمت کی گئی ہے۔ علامہ النابلسی کے مطابق یورپ کو درپیش دہشت گردی کی کارروائیاں اُس کے بُرے کاموں کا نتیجہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ "یورپ میں بے قصور لوگ اپنی حکومتوں کے تعصب اور ہمارے عوام پر ظلم کی قیمت چُکا رہے ہیں۔ افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ یورپ اپنی بداعمالیوں کی سزا بھگت رہا ہے "!

شیعہ مرجع تقلید نے عرب اور اسلامی دنیا میں دہشت گردی کا شکار ہونے والوں کو یورپ میں ہونے والے جانی نقصان سے مربوط کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ " آج یورپ میں جو خون ریزی ہو رہی ہے اُس کا ہمارے ملکوں میں بہنے والے خون سے گہرا تعلق ہے۔ یورپی حکومتیں دہشت گردوں کے سوتے خشک کرنے کے لیے متحرک نہیں ہورہی ہیں بلکہ دہشت گردوں کو پوری آزادی سے چھوڑا ہوا ہے"۔

النابلسی نے استفسار کیا کہ " ہمارے ملکوں میں جو کچھ ہو رہا ہے ، اگر یورپ اُس میں شریک نہیں.. وہ دہشت گردوں کو سپورٹ نہیں کرتا ، ان کے ساتھ تعاون نہیں کرتا اور ان میں سے کسی کو پناہ نہیں دیتا تو پھر وہاں دہشت گردی کا کیا کام جب کہ یورپ انصاف اور امن کی بالادستی کا گڑھ ہے ؟"

علامہ النابلسی اس سے پہلے بشار الاسد کو ہٹانے کے لیے جاری انقلابی تحریک کے خلاف بھی اپنے کئی مواقف کا اظہار کر چکے ہیں۔ انہوں نے شامی عوام کے خلاف بھی ہرزہ سرائی کی جو بہت سے شہروں میں شامی فوج اور حزب اللہ کے محاصرے کا شکار ہیں۔ انہوں نے اپنے 13 جنوری کے ایک مضمون میں دمشق کے نواح میں مضایا شہر کے محاصرے کے بارے میں کہا تھا کہ یہ "ذرائع ابلاغ کی جانب سے گھڑا گیا ہے۔

واضح رہے کہ "مضایا" کے محاصرے کاے نتیجے میں وہاں کے بہت سے باسی جاں بحق اور زخمی ہوئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں