اسرائیل : 12 سال کے''دہشت گردوں'' کو جیل میں ڈالنے کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اسرائیلی پارلیمان (الکنیست) نے بارہ سال کی عمر تک کے فلسطینی ''دہشت گردوں'' کو جیل میں ڈالنے کے قانون کی منظوری دے دی ہے۔

اسرائیلی پارلیمان نے ایک بیان میں اس قانون کو ''یوتھ بل'' کا نام دیا ہے۔ارکان پارلیمان نے منگل کی شب دوسری اور تیسری خواندگی میں اس کی منظوری دی تھی۔اس کے تحت چودہ سال سے کم عمر لڑکے اور لڑکیوں کو بھی قتل اور اقدام قتل ایسے سنگین جرائم میں ملوّث ہونے کے ہونے کے الزام میں قید کی سزا سنائی جاسکے گی۔

اسرائیلی پارلیمان نے حالیہ مہینوں کے دوران مقبوضہ مغربی کنارے اور بیت المقدس میں یہودیوں پر فلسطینیوں کے چاقو حملوں کے بعد یہ قانون منظور کیا ہے۔اس نے بیان میں مزید کہا ہے کہ ان حملوں کی سنگینی کے پیش نظر زیادہ جارحانہ حکمت عملی اپنانے کی ضرورت تھی۔

اس بل کے محرک وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کی جماعت لیکوڈ پارٹی سے تعلق رکھنے والے رکن پارلیمان انات برکو ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ''یہ بل ان کے لیے ہے جو چاقو دل میں گھونپ کر قتل کرتے ہیں اور اس سے فرق نہیں پڑتا ہے کہ حملہ آور بچہ ہے اور اس کی عمر بارہ یا پندرہ سال ہے''۔

اسرائیل کی انسانی حقوق کی ایک تنظیم بی تسلیم نے اس بل اور فلسطینی نوجوانوں سے اسرائیل کے سلوک پر تنقید کی ہے۔اس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل انھیں اسکولوں میں بھیجنے کے بجائے جیلوں میں ڈال رہا ہے۔اسکولوں میں وہ وقار اور آزادی کے ساتھ پل بڑھ سکتے تھے۔ان نوعمروں کو قید کرنے سے ان کے لیے بہتر مستقبل کے امکانات سے انکار کیا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل کی ایک فوجی عدالت نے مغربی کنارے سے تعلق رکھنے والی ایک بارہ سالہ لڑکی کو پلی بارگین کے تحت اقدام قتل کی مجرمہ قرار دیا تھا اور اس کو چار ماہ قید کی سزا سنائی تھی۔اس کو اپریل میں اسرائیلی جیل سے رہا کیا گیا تھا۔

یکم اکتوبر 2015ء کے بعد سے اب تک اسرائیلی فورسز کی مقبوضہ بیت المقدس اور غرب اردن میں فلسطینیوں کے خلاف سفاکانہ کریک ڈاؤن کارروائیوں میں 219 فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔ان میں سے 130 کے بارے میں اسرائیلی فورسز نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ مبینہ طور پر حملہ آور تھے۔

فلسطینیوں کے مبینہ چاقو حملوں ،فائرنگ یا اپنی گاڑیوں کو راہ گیروں پر چڑھانے کے واقعات میں 34 اسرائیلی ، دو امریکی ،ایک سوڈانی اور ایک ایریٹرین شہری ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے ہیں۔اس دوران غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کے فضائی حملوں میں بھی متعدد فلسطینی شہید ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں