شام : ڈیموکریٹک فورسز نے منبج شہر داعش سے واپس لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے شمال میں سیریئن ڈیموکریٹک فورسز نے ہفتے کےروز حلب صوبے میں داعش تنظیم کے اہم ترین گڑھ منبج شہر کو کنٹرول حاصل کرلیا ہے۔ شام میں انسانی حقوق کی رصدگاہ کے مطابق یہ پیش رفت ڈیموکریٹک فورسز کی جانب سے شدت پسند تنظیم کے خلاف شروع کیے جانے والے معرکے کے دو ماہ بعد سامنے آئی ہے۔ اس دوران سیریئن فورسز کو واشنگٹن کے زیرقیادت بین الاقوامی اتحاد کی جانب سے فضائی معاونت حاصل تھی۔

شامی رصدگاہ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی کو بتایا کہ "سیریئن ڈیموکریٹک فورسز نے منبج شہر کا کنٹرول سنبھال لیا ہے اور شہر میں دہشت گردوں کی محض چند ٹولیاں ہی باقی رہ گئی ہیں جو مقامی آبادی کے درمیان روپوش ہیں"۔

عبدالرحمن نے بتایا کہ کرد اور عرب گرپوں کا یہ اتحاد داعش کے بقیہ دہشت گردوں کی تلاش میں شہر کے بیچ سرچ آپریشن کررہا ہے۔

سیریئن ڈیموکریٹک فورسز نے بین الاقوامی اتحاد کی فضائی معاونت کے ساتھ 31 مئی کو تزویراتی اہمیت کے حامل منبج شہر پر حملے کا آغاز کیا تھا۔ یہ شہر شام میں داعش تنظیم کے اہم ترین گڑھ الرقہ صوبے اور ترکی کی سرحد کے درمیان تنظیم کے لیے مرکزی سپلائی لائن پر واقع ہے۔

ڈیموکریٹک فورسز کو منبج میں داخل ہونے سے قبل شدت پسندوں کی جانب سے شدید مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا جنہوں نے خودکش حملوں ، کار بم دھماکوں اور بارودی سرنگوں کا سہارا لے رکھا تھا۔

منبج شہر الباب اور جرابلس کے شہروں کے ساتھ حلب صوبے میں دہشت گردوں کا نمایاں ترین گڑھ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں