کیا ایران نے سیناء میں "داعش" کو اسلحہ فروخت کیا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایرانی وزارت خارجہ نے عسکری امور سے متعلق اسرائیلی جریدے کی رپورٹ کو مسترد کر دیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ ایران نے مصری صحرائے سینا میں داعش تنظیم کو اسلحہ فروخت کیا ہے۔

اسرائیلی جریدے "اسرائيل ڈیفنس" نے منگل کے روز ایک رپورٹ میں بتایا تھا کہ "مصری صوبے سیناء کے ایک عسکری کیمپ میں تربیت کے دوران داعش تنظیم کے جنگجوؤں کے قبضے میں ایرانی ساخت کا اسلحہ دیکھنے میں آیا"۔ رپورٹ کے مطابق " ایران مذکورہ دہشت گرد تنظیم کے جنگجوؤں کو متعدد قسم کا اسلحہ بالخصوص AM-50 فراہم کر رہا ہے"۔

جریدے نے "ایران سیناء کو اسلحہ فروخت کر رہا ہے" کے عنوان کے تحت بتایا ہے کہ "اسی نوعیت کا اسلحہ ایران نے حزب اللہ، شامی حکومت کی فوج اور غزہ میں اپنی حلیف فلسطینی تنظیموں کو بھی فراہم کیا"۔

دوسری جانب ایرانی وزارت خارجہ کے ایک ذمہ دار نے بدھ کے روز کہا ہے کہ ان کے ملک کے صحراء سینا میں داعش کو اسلحہ فروخت کرنے کے حوالے سے دعوے "مضحکہ خیز اور سراسر جھوٹ پر مبنی" ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں