.

مرکزی انتخابی کمیٹی میں "حماس" کا نمائندہ اسرائیل کے ہاتھوں گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تنظیم حماس نے بدھ کے روز اعلان کیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے مرکزی انتخابی کمیٹی میں تنظیم کے نمائندے "شیخ حسین ابو کویک" کو گرفتار کرلیا ہے۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ یہ گرفتاری 8 اکتوبر کو مقررہ مقامی اور بلدیاتی انتخابات کے نتائج پر "اثر انداز ہونے کی کوشش" ہے۔

حماس کی جانب سے جاری بیان میں بدھ کو علی الصبح ہونے والی اس گرفتاری کی شدید مذمت کی گئی ہے۔ تنظیم نے کہا ہے کہ یہ اقدام مغربی کنارے میں انتخابی مہم میں اسرائیلی مداخلت اور انتخابی نتائج پر اثر انداز ہونے کی پیشگی کوشش شمار کی جا رہی ہے۔

حماس نے متعلقہ بین الاقوامی اداروں پر زور دیا کہ وہ شیخ ابو کویک کی رہائی اور تنظیم کے ارکان کی گرفتاری کا سلسلہ روکنے کے لیے کے لیے فوری مداخلت کریں۔

فلسطینی مرکزی انتخابی کمیٹی نے منگل کے روز مقامی انتخابات کے لیے نامزدگی کا عمل شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کی آخری تاریخ 25 اگست مقرر کی ہے۔

فلسطینی اتھارٹی کی موجودگی میں یہ تیسرے مقامی انتخابات ہو رہے ہیں۔ ایک ایسے وقت میں جب کہ حماس اور فتح تنظیموں کے درمیان سیاسی اختلاف نے قانون ساز اور صدارتی انتخابات کے انعقاد میں رکاوٹ کھڑی کر رکھی ہے۔ حماس نے اعلان کیا ہے کہ وہ اس مرتبہ مقامی انتخابات میں حصہ لے گی جب کہ 2012 کے مقامی انتخابات کا اس نے بائیکاٹ کر دیا تھا۔

حماس تنظیم کے بیان میں یہ بات باور کرائی گئی ہے کہ دُہرے طریقے (اسرائیل اور فلسطینی اتھارٹی کی جانب) سے نشانہ بنانے سے بھی تنظیم کی شوکت کو توڑا نہیں جا سکتا اور ان ہتھکنڈوں سے تنظیم مزید طاقت اور عوام میں پذیرائی حاصل کرے گی۔