.

ایرانی عازمین حج کی دوسرے ممالک سے آمد، 10کمپنیوں کی خدمات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی وزارت امور حج وعمرہ نے دوسرے ملکوں سے آنے والے ایرانی عازمین حج کے لیے 10 حج ٹور آپریٹرز فرموں کو خدمات فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

سعودی عرب کی طرف سے دوسرے ملکوں سے ایرانی عازمین حج کی آمد کے لیے سہولیات کی فراہمی کا اعلان ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب دوسری طرف ایران نے حج جیسے مقدس فریضے کو سیاسی رنگ دینے کے لیے حج کا بائیکاٹ کر رکھا ہے۔ رواں سال ایران نے سعودی عرب کی طرف سے حج پروٹوکول پر دستخط کرنے سے انکار کر دیا تھا جس کے بعد ایران سے عازمین حج وعمرہ کی براہ راست حجاز مقدس آمد معطل ہو گئی تھی۔ تاہم ایرانی ہٹ دھرمی کے باوجود ریاض حکومت نے ایرانی عازمین حج وعمرہ کے لیے حج کے دروازے بند نہیں کیے ہیں۔ اس سلسلے میں عالمی شہرت یافتہ 10 سیاحتی ایجنسیوں اور ٹورآپریٹرز کو دوسرے ملکوں سے ایرانی حجاج کرام کو سعودی عرب لانے اور لے جانے کی خدمات سونپی ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق وزارت حج نے ان ٹور آپریٹرز کا انتخاب کیا ہے جو دوسرے ملکوں سے عازمین حج کے لیے پہلے ہی خدمات انجام دے رہی ہیں۔ اس ضمن میں قابل اعتماد کمپنیوں کو ایرانی عازمین حج کو لانے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ فرضی نام سے کام کرنے والے اداروں کو ایرانی عازمین حج کو لانے کی اجازت نہیں ہے۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ جنوبی ایشیا سےعازمین حج کی حجاز مقدس آمد کے حوالے سے 40 کمپنیوں کو قابل اعتماد قرار دیا گیا ہے۔ مشرقی ایشیا کی 8 افریقی ملکوں کی 15، ترکی، یورپی ملکوں، کینیڈا، امریکا، ناروے اور سربیا کی 100 کمپنیوں کو حجاج کرام کے لیے رجسٹرڈ کیا گیا ہے۔

رپورٹس کے مطابق دوسرے ملکوں سے سعودی سفارت خانوں کے ذریعے 80 فی صد جب کہ اپنے طورپر حجاج کرام کو لانے کے لیے 20 فی صد حصہ مقرر کیا گیا ہے۔