.

شام : انسانی امداد کی ٹیم کا مشن روک دینے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی ایلچی اسٹیفن ڈی میستورا نے شام میں انسانی امداد کی ٹیم کا مشن روک دینے کا اعلان کیا ہے۔ یہ اعلان مشن کے حلب شہر میں امداد پہنچانے میں ناکام ہوجانے کے بعد کیا گیا ہے۔ ڈی میستورا نے باور کرایا کہ " آخری ہفتے میں انسانی امداد شام کے کسی علاقے میں بھی نہیں پہنچ سکی"۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ "شام میں کے محصور علاقوں میں ایک ماہ سے انسانی امداد داخل نہیں ہوئیں.. حلب میں آبادی کے واسطے کئی ہفتوں سے انسانی امداد نہیں پہنچی"۔

ادھر ڈی میستورا کی جانب سے امدادی مشن کو روک دینے کے اعلان پر تبصرہ کرتے ہوئے شامی اپوزیشن اور انقلابی قوتوں کے اتحاد نے کہا ہے کہ "ڈی میستورا کا بیان دمشق کے نواح ، حمص اور درعا میں اکثر محصور علاقوں میں محدود نوعیت کی امداد کا داخلہ روکے جانے کے ایک ماہ بعد سامنے آیا ہے۔ اس دوران بشار حکومت ، حزب اللہ ، پاسداران انقلاب اور روسی فوج کی جانب سے غذائی اور طبی امداد داخل ہونے کی اجازت سے انکار کا سلسلہ جاری ہے"۔

اتحاد نے کہا ہے کہ " شام کے قومی اتحاد میں شامل ہم تمام لوگ بشار الاسد کی حکومت اور اس کے حلیفوں کو محاصرے کے جاری رہنے اور امداد کے روکے جانے کا مکمل ذمہ دار ٹھہراتے ہیں۔ یہ امر سلامتی کونسل کی قرار دادوں کی خلاف ورزی ہے جن میں قرارداد 2254 شامل ہے۔ اس قرارداد میں محاصرے کو فوری طور پر اٹھا لینے اور شہریوں پر بم باری کا سلسلہ روک دینے کا مطالبہ کیا گیا ہے"۔