.

عراق:داعش اپنے زخمیوں کے لیے شہریوں کا خون نچوڑنے لگی

القیارہ میں 200 داعشی جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے سیکیورٹی ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ ملک کے شمالی شہر موصل میں دولت اسلامی داعش کے خلاف جاری آپریشن میں تنظیم کو بھاری جانی نقصان سے دوچار کیا گیا ہے۔ موصل کے جنوبی قصبے القیارہ میں200 داعشی جنگجوؤں کی لاشیں موصل پہنچائی گئی ہیں۔

ادھر موصل کے مقامی شہریوں کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ داعشی جنگجوؤں نے اپنے زخمیوں کے علاج کے لیے شہریوں سے جبراً ان کا خون لینا شروع کر رکھا ہے۔

موصل کے باشندوں کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ داعشی جنگجو مسلسل شہریوں سے خون کے عطیات دینے کی اپیلیں کر رہے ہیں۔ شہریوں کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں کہ اگرانہوں نے عراقی فوج اور اتحادی ممالک کے فضائی حملوں میں زخمی ہونے والے جنگجوؤں کے لیے خون کے عطیات نہ دیے توانہیں اس کا خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔

ادھر محاذ جنگ سے ملنے والی اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ داعش نے موصل ہوائی اڈے کے رن وے کا کا ایک بڑا حصہ تباہ کر دیا ہے۔ اتحادی ممالک کے طیاروں نے البکر کالونی میں بمباری کرکے کم سے کم چار داعشی جنگجوؤں کو ہلاک کیا ہے۔

ادھر موصل کے شمال مشرقی قصبے سعدیہ میں داعش کے ٹھکانوں پر حملوں کے نتیجے میں کم سے کم 12 جنگجو ہلاک اور گولہ بارود کی بھاری مقدار تباہ کر دی گئی ہے۔

دس جنگجو القیارہ اور جنوبی موصل کے مخمور قصبے کے درمیان بارود سے بھری کار میں دھماکے سے ہلاک ہو گئے۔

عراقی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے صوبہ نینویٰ کے تلعفر کے مقام پر داعش کے ایک ٹریننگ سینٹر پر حملہ کر کے کم سےکم 60 جنگجوؤں کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہے۔ مقتولین میں داعشی خلیفہ ابو بکر البغدادی کے نائب ابو حمزہ ازبکی بھی شامل ہے۔ ازبکی ازبکستان کی فوج کا سابق افسر رہ چکا ہے۔تازہ کارروائی میں ابو عائشہ الشامی نامی داعشی کمانڈر بھی ہلاک ہوچکا ہے۔ الشامی القائم کے نواحی علاقے الخیر میں داعش کا گورنر تھا۔

عراقی فوج نے داعش کے خلاف حالیہ مہینوں میں جاری کارروائیوں میں شدت پسند تنظیم کے اہم کمانڈروں کو ہلاک کرنے میں اہم کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ اس سے قبل عراق میں لڑائی کے دوران داعش کے وزیر دفاع ابو عمر الشیشانی کو بھی موت کے گھاٹ اتارا جا چکا ہے۔ الشیشیانی کے بعد عراق میں داعش کے دوسرے اہم کمانڈر ابو علی الانباری کی ہلاکت نے تنظیم کو مزید غیرمعمولی نقصان سے دوچار کیا ہے۔ داعش کے دوسرے وزیردفاع محمد احمد سلطان البجاری اور موصل میں داعش کے ملٹری کمانڈر حاتم طالب الحمدونی کو بھی قتل کر دیا گیا ہے