لبنانی ہوائی اڈے کی سیکیورٹی سوالیہ نشان کیوں بنی؟

بارہ سالہ فلسطینی لڑکا ویزے اور پاسپورٹ کے بغیر ہوائی جہاز پرسوار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

دنیا بھرمیں دہشت گردی کے واقعات کے تناظرہوائی اڈوں کی سیکیورٹی سخت کرنے کے ساتھ ساتھ تمام مسافروں کو تلاشی کے غیرمعمولی عمل سے گذرنا پڑتا ہے مگر لبنان کے رفیق حریری بین الاقوامی ہوائی اڈے کا پورا سیکیورٹی سسٹم ایک بارہ سالہ فلسطینی بچے کے ہاتھوں اس وقت تماشا بن کر رہ گیا جب پتا چلا کہ ایک فلسطینی لڑکا بغیر کسی پاسپورٹ، ویزا اور دیگر سفری دستاویزات کے لبنان کے ایک ہوائی جہاز پرسوار ہوکر ترکی پہنچ گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ 12 سالہ فلسطینی لڑکا خالد الشبطی بدھ کو بیروت میں بین رفیق حریری بین الاقوامی ہوائی اڈے میں داخل ہوا۔ اس کے داخلے کے وقت کسی نے کوئی نوٹس نہ لیا، یہاں تک وہ مڈل ایسٹ ائیرلائن کے بیروت سے استنبول جانے والے ایک مسافربردار جہاز میں سوار ہوگیا۔ اس کے پاس کسی قسم کی سفری دستاویزات نہیں تھیں۔

فلسطینی بچے کے غیرقانونی طور پر جہاز میں سوار ہونے کا عقدہ اس وقت کھلا جب ہوائی جہاز بین استنبول کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر لینڈ کرچکا تھا اور مسافر جہاز سے اتر رہے تھے۔ اگرچہ بچے کو اسی روز ایک دوسری پرواز کے ذریعے واپس بیروت تو بھیج دیا گیا مگر اس نے لبنانی سیکیورٹی سروس پیشہ وارانہ ’کارکردگی‘ پر ایک داغ لگا دیا تھا۔

فلسطینی لڑکے کے بغیر کسی چیکنگ ترکی کے سفر کے واقعے کی اعلیٰ سطح تحقیقات شروع کردی گئی ہیں۔ رفیق حریری ہوائی اڈے کے نگران فادی حسن نے جمعہ کو جاری کردہ ایک بیان میں بتایا کہ سیکیورٹی حکام اس بات کا پتا چلانے کی کوشش کررہے ہیں کہ آیا ایک بارہ سالہ فلسطینی لڑکا سفری دستاویزات کے بغیر ہوائی اڈے اور مسافر جہاز تک کیسے پہنچا اور اس سارے عملے میں کس کس کی غفلت کار فرما ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ سیکیورٹی کے معاملے میں غفلت برتنے والے اہلکاروں کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

خیال رہے کہ لبنان میں پہلے سے موجود فلسطینی پناہ گزینوں کے علاوہ شام کی خانہ جنگی کے بعد مزید سیکڑوں خاندان بیروت منتقل ہوئے ہیں۔ خالد الشبطی کا خاندان بھی بیروت کے قریب واقع البراجنہ نامی فلسطینی پناہ گزین کیمپ میں رہائش پذیر ہے۔

یہ واقعہ سوشل میڈیا پر بھی زیربحث ہے اور لوگ اس پرطنزو مزاح اور لبنانی ہوائی اڈے کی سیکیورٹی فورسز پر تنقید سے بھرپور تبصرے کررہے ہیں۔

مڈل ایسٹ ائیرلائن نے بھی اپنے طورپر جہاز میں غیرقانونی طور پر فلسطینی بچے کے سفر کی تحقیقات کا فیصلہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں