شامی فوجیوں کی حلب کے نزدیک محاصرے کے لیے پیش قدمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کے سرکاری میڈیا اور حزب اختلاف کے ایک گروپ نے اطلاع دی ہے کہ سرکاری فوج شمالی شہر حلب کے نزدیک باغیوں کے زیر قبضہ حصوں کی جانب پیش قدمی کررہی ہے اور اس کا مقصد ایک مرتبہ پھر باغیوں کے زیر قبضہ شہر کے مشرقی علاقے کا محاصرہ کرنا ہے۔

شامی فوج نے اتوار کے روز یہ پیش قدمی باغی گروپوں کی حلب کے جنوب میں جنگی فتوحات کے قریباً ایک ماہ بعد کی ہے۔باغی جنگجوؤں نے گذشتہ ماہ متعدد فوجی اکیڈیمیوں اور عسکری اسکولوں پر قبضہ کر لیا تھا اور حلب کے مشرقی حصوں میں سامان رسد پہنچانے اور آمد ورفت کے لیے ایک راستہ بھی کھولنے میں کامیاب ہوگئے تھے۔

اس کے بعد سے شامی فوج ،اس کی اتحادی ملیشیائیں اور شیعہ جنگجو اس علاقے پر دوبارہ قبضے کی کوشش کررہے ہیں۔ شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے ایک بغیر نامی فوجی عہدے دار کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ فوجیوں نے ایک عسکری اکیڈیمی پر دوبارہ قبضہ کر لیا ہے اور انھوں نے حلب میں مسلح افراد کے زیر قبضہ علاقے کے مکمل محاصرے کے لیے پیش قدمی جاری رکھی ہوئی ہے۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے سرکاری فوجیوں کے اکیڈیمی پر قبضے کی تصدیق کی ہے۔ شامی فوج حلب اور اس کے نواحی علاقوں میں لڑائی میں شدت لا رہی ہے جبکہ دوسری جانب امریکا اور روس اس شہر میں عیدالاضحیٰ سے قبل متحارب گروہوں کے درمیان جنگ بندی کے لیے بھی کوشاں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں