اردن میں شامی جنگجوؤں کے زیراستعمال نشہ آور دوا کی بھاری مقدار برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں لڑنے والے بعض جنگجو گروپ جہادی ہونے کا دعویٰ کرتے ہیں لیکن ان کی غیر اخلاقی سرگرمیوں اور منشیات کے دھندے میں ملوث ہونے سے متعلق رپورٹس گاہے گاہے سامنے آتی رہتی ہیں۔اب ایک نئی رپورٹ میں یہ پتا چلا ہے کہ وہ لڑائی کے دوران نشہ آور ادویہ استعمال کرتے ہیں اور ان کے زیر استعمال ایک کروڑ تیس لاکھ سے زیادہ کیپٹاگون گولیاں پڑوسی ملک اردن میں پکڑی گئی ہیں۔

اردن کی وزارت داخلہ نے بتایا ہے کہ نشہ آور ادویہ کی اسمگلنگ کا دھندا کرنے والے تین مبی٘نہ اسمگلروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ان میں ایک غیر ملکی ہے۔وزارت کا کہنا ہے کہ اردن کی تاریخ میں منشیٰ گولیوں کی یہ سب سے بڑی تعداد ہے۔

وزارت کی جانب سے بدھ کو جاری کردہ بیان کے مطابق یہ گولیاں گرفتار افراد میں سے ایک کے دارالحکومت عمان کے نزدیک واقع گھر سے برآمد کی گئی ہیں اور یہ کسی اور ملک میں بھیجی جانا تھیں لیکن وزارت نے اس کی مزید تفصیل نہیں بتائی ہے۔

اقوام متحدہ کے دفتر برائے منشیات اور جرائم نے کیپٹاگون کو ایمفٹامائن طرز کی قوت بخش دوا قرار دے رکھا ہے۔قبل ازیں متعدد رپورٹس میں یہ انکشاف ہوچکا ہے کہ شام میں برسر جنگ گروپ کیپٹاگون کا عام استعمال کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ 2016ء کی پہلی ششماہی کے دوران اردنی حکام نے چھے ٹن سے زیادہ غیر قانونی منشیات ضبط کی ہیں اور منشیات کی اسمگلنگ ،انھیں رکھنے یا استعمال کرنے کے الزامات میں تیرہ ہزار سے زیادہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں