عراق کی شیعہ ملیشیا نے 1000 سے زیادہ جنگجو شام میں جھونک دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کے شانہ بشانہ لڑنے والی عراق کی ایک شیعہ ملیشیا نے گذشتہ دو روز کے دوران اپنے ایک ہزار سے زیادہ ایلیٹ جنگجو کمک کے طور پر شمالی صوبے حلب میں لڑائی کے لیے بھیجے ہیں۔

اس عراقی ملیشیا حرکۃ النجابہ کے ترجمان ہاشم الموسوی نے بدھ کو ایک بیان میں بتایا کہ یہ اضافی جنگجو حلب کے جنوبی حصوں میں شامی فوج کے شانہ بشانہ باغی گروپوں کے خلاف لڑائی میں حصہ لیں گے اور ان سے قبضے میں لیے گئے علاقوں پر کنٹرول مضبوط کرنے میں مدد دیں گے۔

یہ عراقی ملیشیا شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کی حمایت میں لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ ،ایرانی فورسز اور دوسری ملیشیاؤں کے ساتھ مل کر باغیوں کے خلاف لڑرہی ہے۔شامی فوج اور اس کی اتحادی فورسز نے اتوار کے روز حلب کے جنوبی حصے کی جانب پیش قدمی کرتے ہوئے باغیوں کے زیر قبضہ شہر کے نصف حصے کا دوبارہ محاصرہ کر لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں