حوثی بارودی سرنگوں کے ذریعے یمنیوں کو ہلاک کر رہے : ہیومن رائٹس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے حوثی اور معزول صدر علی عبداللہ صالح کی ملیشیاؤں پر الزام عائد کیا ہے کہ ان کی جانب سے تعز میں نصب کی گئیں بارودی سرنگوں کی وجہ سے مقامی شہری جاں بحق اور زخمی ہوئے۔

تنظیم نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ملیشیاؤں کی طرف سے بچھائی گئی بارودی سرنگوں کے نتیجے میں مئی 2015 سے اپریل 2016 تک تعز صوبے میں 18 افراد جاں بحق اور 39 سے زیادہ زخمی ہو گئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں 5 بچے بھی شامل ہیں جب کہ 13 بچے زخمی ہوئے اور 4 کو دائمی معذوری کا شکار ہونا پڑا۔

ہیومن رائٹس واچ کا کہنا ہے کہ ملیشیاؤں کی جانب سے شہریوں کے حوالے سے انتہائی سخت گیری کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے۔ تنظیم نے مطالبہ کیا ہے کہ بارودی سرنگیں بچھانے کا سلسلہ فوری طور پر روکا جائے اور ملیشیاؤں کے قبضے میں موجود بارودی سرنگوں کو تلف کیا جائے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں