شام میں جنگ بندی جاری ،امدادی سامان بھیجنے کی تیاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام بھر میں امریکا اور روس کی ثالثی میں طے پانے والی جنگ بندی پر عمل درآمد جاری ہے جبکہ شامی فورسز کے محاصرے کا شکار شمالی شہر حلب اور دوسرے علاقوں میں امدادی سامان بھیجنے کی تیاری کی جارہی ہے۔

شام کے سرکاری میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ مسلح گروپوں نے منگل کے روز حلب شہر اور وسطی صوبے حمص میں سات مقامات پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کی ہے جبکہ برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کا کہنا ہے کہ حکومت نواز فورسز نے حلب کے جنوب میں واقع دو دیہات اور دارالحکومت دمشق کے ایک نواحی علاقے پر گولہ باری کی ہے۔

تشدد کے ان واقعات میں کسی شخص کی ہلاکت یا زخمی ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ملی ہے۔روسی فوج کا کہنا ہے کہ حلب میں مجموعی طور پر جنگ بندی پر عمل درآمد جاری ہے۔

درایں اثناء ترکی کے سرحدی قصبے چلویغوزو سے بیس ٹرکوں پر مشتمل ایک امدادی قافلہ شام کے شمالی علاقے میں داخل ہوا ہے۔ ترکی کے ایک عہدے دار کا کہنا ہے کہ ان ٹرکوں پر آٹا اور غذائی اجناس لدی ہوئی ہیں۔ تاہم یہ واضح نہیں ہے کہ یہ امدادی سامان کس شہر اور کس گروپ کے لیے بھیجا گیا ہے۔

شامی حکومت کا کہنا ہے کہ اگر اقوام متحدہ یا اس کے ساتھ رابطے کے بغیرامدادی سامان بھیجا گیا تو اس کو حلب میں داخل ہونے اور تقسیم کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔اس نے خاص طور پر ترکی سے آنے والے امدادی سامان کو روکنے کی دھمکی دی ہے۔

درایں اثناء اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اس کے ٹرک ابھی تک ترکی سے شام میں داخل نہیں ہوئے ہیں اور اس کو جنگ بندی پر عمل درآمد کی تصدیق کا انتظار ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں