.

امریکا کا شامی حکومت پر الزام ، تعاون روک دینے کی دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا نے شامی حکومت پر حلب میں انسانی امداد پہنچنے میں رکاوٹ پیدا کر رہی ہے۔ ساتھ ہی واشنگٹن نے یہ دھمکی بھی دی ہے کہ اگر جنگ بندی کی خلاف ورزیاں سامنے آئیں تو وہ روس کے ساتھ عسکری تعاون روک دے گا۔

وہائٹ ہاؤس کے ترجمان جوش ارنسٹ کا کہنا ہے کہ جنگ بندی کو تین روز گزر جانے کے بعد بھی ترکی اور شام کی سرحد پر انسانی امداد کے قافلوں کو شدید دشواریوں کا سامنا ہے۔

دوسری جانب امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون کے ترجمان پیٹر کُک نے اپنی مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر جنگ بندی کی شرائط پوری نہ ہوئیں تو واشنگٹن اپنے وعدوں کی پاسداری نہیں کرے گا۔

اسی سے متصل سیاق میں اقوام متحدہ میں روس کے مستقل مندوب وٹالی چورکن نے کہا ہے کہ ماسکو اس بات کے لیے پوری کوششیں کر رہا ہے کہ سلامتی کونسل آئندہ ہفتے شام میں جنگ بندی کے اس معاہدے کی سپورٹ کی قرار داد منظور کرلے جو ماسکو اور واشنگٹن کے درمیان طے پایا ہے۔

چورکن نے باور کرایا کہ روس اقوام متحدہ کی قرارداد کا مسودہ ترتیب دینے کا ارادہ رکھتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ضروری ہے کہ اس کو 21 ستمبر کو منظور کر لیا جائے کیوں کہ اس روز سلامتی کونسل شام کے حوالے سے اعلی سطح کا اجلاس منعقد کرے گی۔