.

شام : دمشق کے مشرق میں شدید گولہ باری اور جھڑپیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں عسکری ذرائع نے بتایا ہے کہ جمعے کے روز دارالحکومت دمشق کے مشرقی حصے کے اطراف میں شدید گولہ باری اور جھڑپیں ہوئیں۔ یہ کارروائی پیر کو کمزور سی جنگ بندی کے آغاز کے چوتھے روز دیکھنے میں آئی۔

عسکری ذرائع کے مطابق "شامی فوج ان مسلح گروپوں کے حملے کو روکنے کی کوشش کر رہی ہے جنہوں نے دارالحکومت کے مشرق میں الغوطہ کے علاقے میں دراندازی کی کوشش کی۔ اس دوران جن علاقوں میں مسلح گروپوں نے پیش قدمی کی کوشش کی وہاں شدید جھڑپیں اور راکٹ باری دیکھنے میں آئی"۔

ایک غیرملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق جمعے کی صبح بھاری ہتھیاروں سے فائرنگ کے علاوہ توپ کے 30 سے زیادہ گولے گرنے کی آوازیں سنائی دیں۔

انسانی حقوق کی شامی رصدگاہ نے بتایا ہے کہ " دمشق میں اولڈ سٹی کے علاقے باب الشرقی میں دو گولے گرے جن کے نتیجے میں مادی نقصان پہنچا"۔ اس کے علاوہ جھڑپوں کے ساتھ "جوبر کے علاقے میں توپ کے 20 سے زیادہ گولے اور ایک راکٹ بھی گرا جس کے بارے میں خیال ہے کہ یہ زمین سے زمین تک مار کرنے والا ہے"۔

امریکا اور روس کے درمیان معاہدے کے موجب پیر کی رات سے شام میں نافذ العمل جنگ بندی سے دو تنظیمیں "داعش" اور"جبہہ فتح الشام" مستثنی ہیں جن کو ملک میں وسیع علاقوں پر کنٹرول حاصل ہے۔