.

عراق : پارلیمان میں وزیر خزانہ زیباری کو برطرف کرنے کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کی پارلیمان نے وزیر خزانہ اور نائب وزیر اعظم ہوشیار زیباری کو بدعنوانیوں کے الزامات میں برطرف کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق پارلیمان میں بدھ کو رائے شماری کے وقت 328 اراکین میں سے 156 نے ہوشیار زیباری کو برطرف کرنے کے حق میں ووٹ دیا ہے۔

ہوشیار زیباری ایک بااثر کرد سیاست دان ہیں۔انھوں نے اکتوبر 2014ء میں وزارت خزانہ کا قلم دان سنبھالا تھا۔اس سے پہلے وہ گیارہ سال تک عراق کے وزیر خارجہ رہے تھے۔ ان سے اگست میں پارلیمان میں بدعنوانیوں کے الزامات پر پوچھ تاچھ کی گئی تھی۔

ان سے قبل پارلیمان اسی انداز میں وزیر دفاع خالد العبیدی کو بھی بدعنوانیوں کے الزامات میں رائے شماری کے ذریعے برطرف کر چکی ہے۔ان پر دفاعی سودوں میں خرد برد کے الزامات عاید کیے گئے تھے۔

عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی ستمبر 2014ء میں برسراقتدار آنے کے بعد سے سرکاری محکموں میں بدعنوانیوں کے خاتمے اور اصلاحات کے لیے کوشاں ہیں لیکن سیاسی رسہ کشی اور سیاسی جماعتوں میں تقسیم کی وجہ سے وہ بدعنوانیوں کے خاتمے کے لیے اپنے ایجنڈے کو ابھی تک عملی جامہ نہیں پہنا سکے ہیں۔