آئندہ 48 گھنٹوں میں دابق پہنچ جائیں گے : شامی اپوزیشن رہ نما

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شامی اپوزیشن کے ایک رہ نما نے پیر کے روز بتایا ہے کہ اگر تمام امور منصوبے کے مطابق چلتے رہے تو اپوزیشن جنگجوؤں نے 48 گھنٹوں کے اندر دابق کے قصبے تک پہنچنے کا ہدف مقرر کیا ہے ، یہ قصبہ داعش تنظیم کے زیرقبضہ ہے۔ تنظیم کے لیے اس علاقے کی مذہبی لحاظ سے بڑی اہمیت ہے۔

اپوزیشن رہ نما احمد عثمان کے مطابق دابق کی جانب پیش قدمی سست روی کے ساتھ ہوئی کیوں کہ داعش تنظیم علاقے میں بڑی تعداد میں بارودی سرنگیں بچھائی ہوئی ہیں۔

ایک غیرملکی خبر رساں ایجنسی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ معاملات پروگرام کے مطابق چلتے رہے تو ان شاء اللہ ہم 48 گھنٹوں کے دوران دابق میں ہوں گے۔

احمد عثمان نے بتایا کہ اتوار کے روز "ترکمان بارح" گاؤں میں بارودی سرنگوں اور مارٹر گولوں کے حملے کے نتیجے میں اپوزیشن کے 15 جنگجو جاں بحق ہو گئے۔ مذکورہ گاؤں کو اپوزیشن جنگجوؤں نے ترکی کی سپورٹ کے ساتھ داعش تنظیم کے کنٹرول سے لے لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں