.

عراق:ماتمی جلوسوں میں دھماکے،11 ہلاک، 40 زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی پولیس اور طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ کل سوموار کی شام دارالحکومت بغداد میں اہل تشیع کے ماتمی جلوسوں میں ہونے والے دو خودکش بم دھماکوں کے نتیجے میں کم سے کم 11 افراد ہلاک اور 40 زخمی ہوئے ہیں۔

خبر رساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق اہل تشیع کے ماتمی جلوسوں پر خود کش بم حملوں کی ذمہ داری دولت اسلامی عراق وشام ’داعش‘ کہلوانے والی شدت پسن تنظیم نے قبول کی ہے۔ داعش کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ اس کے جنگجوؤں نے بغداد میں شہادت امام حسین کی یاد میں جلوس نکالنے والوں کو نشانہ بنایا ہے۔

بغداد سے طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک خود کش بمبار نے جنوبی قصبے العامل میں ایک جلوس پرحملہ کیا جس میں چھ افراد ہلاک اور 25 زخمی ہوئے۔ دوسرا خودکش حملہ مشرقی بغداد میں المشتل کے مقام پر نکالے گئے جلوس پر کیا گیا جس میں پانچ افراد ہلاک اور 18 زخمی ہوگئے۔