.

یمن : تزویراتی علاقوں پر سرکاری فوج کا کنٹرول مضبوط

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں سرکاری فوج نے باغی ملیشیاؤں کی جانب سے عدن الشامی گاؤں کے نزدیک بلند ٹیلوں پر قبضہ کرنے کی کوششوں کو ناکام بنا دیا۔

سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے المخدرة قصبے میں وسیع پیمانے پر عسکری کارروائیوں کا آغاز کردیا تاکہ اس قصبے کو باغی ملیشیاؤں کے ارکان سے پاک کیا جاسکے۔

یہ پیش رفت سرکاری فوج کی جانب سے متعدد علاقوں پر اپنی گرفت مضبوط کرنے کے بعد سامنے آئی ہے۔ ان علاقوں میں الجدعان کے علاقے میں واقع جبل الطریف ، جبل الدرماء اور الحانی گاؤں شامل ہیں۔

یمن میں متعدد محاذوں پر باغی ملیشیاؤں کو سرکاری فوج اور اتحادی افواج کے ہاتھوں بھاری جانی اور سازوسامان کا نقصان اٹھانا پڑ رہا ہے۔ دارالحکومت صنعاء کے شمال مشرق میں نہم کے محاذ پر شدید جھڑپیں ہوئیں جس کے دوران سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کار جبلِ ام حریم اور ارحب قبائل کے علاقوں پر کنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے۔

الضالع صوبے کے علاقے مریس کے مغرب میں سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کے ساتھ جھڑپوں میں باغی ملیشیاؤں کے درجنوں جنگجو ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

مذکورہ جھڑپیں باغی ملیشیاؤں کی جانب سے "عدن الشامی" گاؤں کے نزدیک بلند ٹیلوں پر قبضے کے لیے جاری مسلسل کوششوں کے نتیجے میں ہوئیں۔