یونیسکو کا فیصلہ مسلمانوں کی فتح ہے : الازہر و مصری دارالافتاء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی معروف علمی درس گاہ الازہر نے یونیسکو کی جانب سے اس عرب قرار داد کے حق میں ووٹ دیے جانے کا خیر مقدم کیا ہے جس میں باور کرایا گیا ہے کہ مسجد اقصی اور اس کا پورا حرم مقدس اسلامی مقامات ہیں اور یہ مسلمانوں کی عبادت کے لیے مخصوص ہیں۔

الازہر کی رصدگاہ کے مطابق یہ فیصلہ فلسطینی عوام اور دنیا بھر میں مسلمانوں کی خواہش کی فتح ہے۔ رصدگاہ نے مسئلہ فلسطین کے جامع اور منصفانہ حل کے لیے فوری طور پر متحرک ہونے کی ضرورت پر زور دیا جس کے تحت اسرائیلی قبضے کا خاتمہ ہو، لوگوں کو ان کے حقوق لوٹائیں جائیں ، بیت المقدس شہر کے مذہبی اور ثقافتی تشخص اور ورثے کو برقرار رکھا جائے ، فلسطینی قوم کے حقوق تسلیم کیے جائیں اور مسجد اقصی اور مقبوضہ بیت المقدس کے خلاف صہیونی کارروائیوں کا سلسلہ روک دیا جائے۔

دوسری جانب مصر کے مفتی ڈاکٹر شوقی علام نے "یونیسکو" تنظیم کے اس فیصلے کو سراہا ہے جس میں مسجد اقصی کو صرف مسلمانوں کا خاص مقدس مقام شمار کیا گیا ہے جس میں یہودیوں کا کوئی حق نہیں۔

انہوں نے عرب اور اسلامی دنیا سے مطالبہ کیا کہ یونیسکو کے فیصلے سے مستفید ہونے کے لیے فوری طور پر حرکت میں آیا جائے۔

اقوام متحدہ کی ذیلی تنظیم "يونسكو" نے پیرس میں 58 ممالک کی موجودگی میں اس قرار داد کو منظور کیا جس کے مطابق بیت المقدس میں مسجد اقصی کا یہودیوں سے کوئی تعلق نہیں اور یہ مسلمانوں کا مقدس مقام ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں