.

موصل کا معرکہ : 17 دیہات اور تیل کے 56 کنوئیں آزاد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراقی افواج نے جمعرات کے روز اعلان کیا ہے کہ اس نے موصل کے مشرقی داخلی راستے سے 15 کلومیٹر دور واقع شہر برطلہ کا پورا کنٹرول حاصل کر لیا ہے۔ مشترکہ عراقی فورسز موصل کے جنوب میں 17 دیہات اور تیل کے 56 کنوؤں سے داعش تنظیم کو نکال کر وہاں کا کنٹرول دوبارہ سے سنبھالنے میں کامیاب ہو گئی ہیں۔

تزویراتی اہمیت کے حامل شہر برطلہ پر کنٹرول کے بعد عراقی فورسز نے موصل کے معرکے میں بڑی پیش قدمی کو یقینی بنایا ہے۔ عراق کے دوسرے بڑے شہر موصل سے داعش کو نکالنے کے لیے جاری معرکے میں آبادی سے خالی مسیحی شہر برطلہ اہم موڑ کی حیثیت رکھتا ہے۔

عراقی فورسز کے ایک افسر کا کہنا ہے کہ " اب برطلہ ہماری فوسز کی پیش قدمی کے حوالے سے بنیادی دفاعی لائن شمار کیا جا رہا ہے۔ اس واسطے ہم موصل کے باسیوں کو خوش خبری دیتے ہیں کہ ہم موصل اور اس کے نواحی علاقوں کو آزاد کرانے آ رہے ہیں"۔

ہزاروں شہریوں کی نقل مکانی

دوسری جانب ہجرت سے متعلق بین الاقوامی تنظیم نے اعلان کیا ہے کہ موصل شہر کے اطراف لڑائی نے گزشتہ تین روز میں 5640 عراقیوں کو اپنے گھروں سے فرار ہونے پر مجبور کر دیا۔

اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے پناہ گزین کے مطابق مقامی آبادی موصل کے مغربی حصے فضائی حملوں اور شدید گولہ باری کے بعد مشرق کی سمت بھی فرار ہو رہے ہیں۔

ہائی کمیشن کے مطابق موصل سے 900 خاندان یعنی تقریبا 5400 افراد القیارہ کے علاقے میں قائم استقبالیہ مرکز میں منتقل ہوئے۔