عراق : سنجار پر داعش کا حملہ پیشمرگہ کے ہاتھوں پسپا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں کرد پیشمرگہ فورسز نے موصل کے مغرب میں واقع علاقے سنجار پر "داعش" تنظیم کے حملے کو پسپا کردیا۔

مقامی ذرائع نے بتایا ہے کہ پیشمرگہ فورسز نے بین الاقوامی اتحاد کے فضائی طیاروں کی معاونت سے حملے کو ناکام بنایا۔ کارروائی میں داعش کے 15 ارکان ہلاک ہوئے جب کہ دیگر جنگجو نینوی صوبے میں القحطانیہ کے علاقے کی جانب فرار ہو گئے۔

"الحدث" نیوز چینل کے مطابق انسداد دہشت گردی کے ادارے نے موصل شہر کے مشرق میں دو دیہات الخزنہ اور بازوایہ پر حملے کا آغاز کر دیا ہے۔ اس دوران "داعش" کے ٹھکانوں پر شدید گولہ باری اور اتحادی طیاروں کی جانب سے بم باری کی گئی۔

بم باری اور گولہ باری کی کارروائیوں کا مقصد موصل شہر کی مشرقی سمت سے عراقی فورسز کے دھاوے سے قبل داعش کی صلاحیتوں کو کمزور کرنا ہے۔

الرطبہ کے ڈپٹی کمشنر عماد الدليمی کے مطابق الانبار کے مغرب میں واقع الرطبہ میں عراقی فوج اور پولیس کے لیے تازہ کمک پہنچ گئی ہے۔ اس کا مقصد عراقی فورسز کو قوت فراہم کرنا ہے جو شہر کی سڑکوں پر داعش تنظیم کے جنگجوؤں کے ساتھ لڑائی میں مصروف ہیں۔

الدلیمی نے واضح کیا کہ بین الاقوامی اتحاد کے طیاروں نے داعش تنظیم کے ارکان سے بھری 13 گاڑیوں کو تباہ کردیا جو الرطبہ کی جانب جارہی تھیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں