.

موصل میں جاری آپریشن منطقی انجام تک پہنچائیں گے:العبادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے وزیراعظم حیدر العبادی نے کہا ہے کہ موصل میں دولت اسلامی’داعش‘ کے قبضے کے خلاف جاری فوجی آپریشن روکنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ موصل معرکے کو اس کے منطقی انجام تک ہرصورت میں پہنچایا جائے گا۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مابق موصل جنگ روکے جانے سے متعلق بات کرتے ہوئے عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کا کہنا تھا کہ اس قسم کی تمام افواہیں بے بنیاد ہیں کہ موصل میں جنگ روک دی گئی ہے۔ موصل آپریشن کو اس کے منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ موصل میں لڑائی بدستور جاری ہے اور عراقی فوج نے داعش کے قبضے سے کئی اہم علاقے خالی کرالیے ہیں۔ جب تک نینویٰ کا سارا علاقہ داعش سے آزاد نہیں ہوجاتا جنگ جاری رہے گی۔

قبل ازیں عراق کی فیڈرل پولیس چیف میجر شاکر جودت نے ’الحدث‘ سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ پولیس نے جنوبی موصل میں داعش کے زیرقبضہ ایک سرکاری عمارت کا کنٹرول سنھبال لیا ہے اور اب عمارت پر عراقی پرچم لہرا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پولیس فرارہونے والے داعشی دہشت گردوں کا تعاقب کررہی ہے۔قبل ازیں عراقی پولیس نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے جنوبی موصل میں الشورہ کے مقام سے داعش کو نکال باہر کیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ فورسز نے الشورہ کے علاقے پر چار اطراف سے حملہ کیا اور باغیوں کو بھاگنے پر مجبور کردیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ الشورۃ اور اس کے قرب وجوار میں کارروائی کے دوران عین النصر قصبے کو بھی آزاد کرالیا گیا ہے اور کارروائی میں پانچ دہشت گرد ہلاک اور بارود سے بھری تین گاڑیاں تباہ کردی گئی ہیں