.

حلب میں بمباری، اسدی نیوز کاسٹر نے روسی دعوے کا پول کھول دیا

حلب میں بمباری نہ کرنے کا روسی دعویٰ غلط ثابت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے سرکاری ٹیلی ویژن چینل کے ایک نیوز کاسٹر نے روس کی طرف سے جاری کردہ اس دعوے کو مسترد کردیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ گذشتہ کئی روز سے شام اور روس کے جنگی طیاروں نے شمالی شام کے شہر حلب پربمباری نہیں کی ہے۔ نیوز کاسٹر کا کہنا ہے کہ کل اتوار کے روز شامی فوج کے بمبار طیاروں نے حلب میں متعدد مقامات پر بم برسائے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شام کے سرکاری ٹی وی سے وابستہ صحافی شادی حلوۃ کی طرف سے روسی دعوے کو مسترد کیے جانے کی خبر ویڈیو کی شکل میں انٹرنیٹ پر موجود ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ’فیس بک‘ پر بھی وہ خبر پوسٹ کی ہے۔ فوٹیج میں شادی حلوۃ کو یہ کہتے سنا جاسکتا ہے کہ روس کی طرف سے حلب میں کئی روز سے بمباری نہ کیے جانے کا دعویٰ غلط ہے۔ ہمارے جنگی جہازوں نے آج ہی [اتوار کو] حلب پر بمباری کی ہے۔

قبل ازیں حلب میں بمباری کے واقعے کے بعد روس کی طرف سے ایک بیان سامنے آیا تھا جس میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ روس اور شام کے جنگی جہازوں نے تو کئی روز سے حلب پر کوئی فضائی حملہ نہیں کیا ہے۔

روسی وزارت دفاع کے ترجمان ایگور کوناشیکوف نے اتوار کے روز ایک بیان میں کہا کہ پچھلے 13 دنوں سے شامی اور روسی طیاروں نے حلب پر بمباری کے لیے کوئی اڑان نہیں بھری جب کہ سرکاری ٹی کےنیوز کاسٹر نے روس کے جھوٹ کا پول یہ کہہ کر کھول دیا کہ اتوار کے روز ہمارے جنگی طیاروں نےحلب پر بمباری کی ہے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل بھی شام میں کئی مقامات پر بمباری کے بعد شام اور روس مکر جاتے رہے ہیں مگر بعد ازاں انہی کی بمباری ثابت ہوتی رہی ہے۔