.

عراقی فورسز کا موصل کے نواح میں ایک گاؤں پر قبضہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کی خصوصی فورسز نے داعش کے زیر قبضہ شمالی شہر موصل کی جانب مشرق سے پیش قدمی کی ہے اور ایک گاؤں پر قبضہ کر لیا ہے۔خصوصی فورسز نے شہر کی مشرقی حدود میں راستوں کو صاف کردیا ہے جس سے آرمی یونٹوں کو پیش قدمی میں مدد ملی ہے۔

فوج نے بکتر بند گاڑیوں اور ٹینکوں کے ساتھ سوموار کو علی الصباح گاؤں بزوايا کی جانب پیش قدمی کی تھی۔ داعش نے انھیں روکنے کے لیے ان کی جانب مارٹر گولے اور ہلکے ہتھیار فائر کیے تھے جبکہ عراقی فوج کے اتحادیوں نے توپ خانے اور فضائی حملوں میں داعش کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا ہے۔عراقی فوج نے اس گاؤں پر قبضے کے بعد وہاں قومی پرچم لہرا دیے ہیں۔

شام تک بزوایا محاذ پر لڑائی ختم ہوچکی تھی اور عراقی فوج کے یونٹوں نے موصل کی مشرقی سرحد سے دور ایک میل سے بھی کم فاصلے پر پوزیشنیں سنبھال لی ہیں اور وہ شہر کے مرکز سے صرف پانچ میل دور رہ گئے ہیں۔

عراقی فوج کے ایک بریگیڈئیر جنرل حیدر فاضل نے بتایا ہے کہ ''تین خود کش بمباروں نے پیش قدمی روکنے کی کوشش کی تھی لیکن فوجیوں نے انھیں فائرنگ کر کے ہلاک کردیا ہے''۔فوج کے ایک اور یونٹ نویں ڈویژن نے موصل کی جانب پیش قدمی کی ہے اور وہ اب شہر کے مشرقی نواحی علاقے سے صرف پانچ کلومیٹر کی دوری پر ہیں۔

بزوايا اور اس کے نواحی علاقوں میں مکینوں نے اپنے گھروں پر سفید پرچم لہرا دیے ہیں۔خصوصی فورسز کے میجر سالم العبیدی کا کہنا ہے کہ یہ سرکاری فوجیوں کے لیے ایک علامت ہے کہ ان کی مزاحمت نہیں کی جائے گی۔انھوں نے بتایا کہ فوجی دیہاتیوں کو اپنے گھروں ہی میں رہنے کی درخواست کررہے ہیں تا کہ وہ داعش کے ممکنہ خودکش بم حملوں سے محفوظ رہیں۔ان کا کہنا ہے کہ داعش پیش قدمی کرنے والے فوجیوں پر خودکش بم حملے کرسکتے ہیں۔

عراقی فوج اور اس کے اتحادیوں نے 17 اکتوبر کو داعش کے خلاف موصل کو بازیاب کرانے کے لیے فیصلہ کن کارروائی کا آغاز کیا تھا۔امریکی فوج کے تخمینے کے مطابق داعش کے تین سے پانچ ہزار جنگجو موصل میں موجود ہیں اور شہر کے نواح میں ان کی تعداد ڈیڑھ سے ڈھائی ہزار کے درمیان ہے۔ ان میں ایک ہزار کے لگ بھگ غیرملکی جنگجو ہیں۔

درایں اثناء دارالحکومت بغداد اور اس کے نواحی علاقوں میں بم دھماکوں میں آٹھ افراد ہلاک اور پچیس زخمی ہوگئے ہیں۔ عراقی پولیس کے مطابق ان میں سب سے تباہ کن بم حملہ جنوبی علاقے الدورہ میں سبزی منڈی کے باہر ہوا ہے جس سے تین شہری ہلاک اور نو زخمی ہوگئے ہیں۔