.

ہماری سرحدیں بحیرہ احمر اور بحیرہ روم تک پہنچ گئی ہیں: ایران

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی پاسداران انقلاب کے نائب سکریٹری جنرل حسین سلامی نے پیر کے روز دھمکی دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا ملک اپنے مخالفین کے تعاقب میں سرحدوں کو تسلیم نہیں کرتا اور "حرم کے محافظین" کی فورسز دنیا میں کہیں بھی ان مخالفین کو تباہ کر دیں گی۔

ایرانی حکام "حرم کے محافظین" کی اصطلاح بشار الاسد کو سپورٹ کرنے کے لیے شام کی جنگ میں موجود اپنی عسکری فورسز پر لاگو کرتے ہیں تاہم اب یہ اصطلاح ایران کے اندرون و بیرون پاسداران انقلاب کے زیر انتظام تمام باسیج فورسز کے لیے استعمال کی جا رہی ہے۔

ایران کے مغربی شہر اورومیہ میں گفتگو کرتے ہوئے سلامی کا کہنا تھا کہ ایرانی افواج نے گزشہ برسوں کے دوران یہ ثابت کیا ہے کہ وہ "ایرانی نظام کے مخالفین کے تعاقب میں کسی ریڈ لائن کو تسلیم نہیں کرتی ہیں"۔ ان کا اشارہ تہران کی جانب سے مغربی ممالک میں اپنے مخالفین کو موت کی نیند سلانے کی کارروائیوں کی جانب تھا۔

ایرانی خبر رساں ایجنسی تسنیم کے مطابق حسین سلامی نے باسیج فورسز کے اجتماع کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ "آپ لوگ دیکھ رہے ہیں کہ ہماری سرحدیں کس طرح وسیع ہوئی ہیں.. ایرانی سرحدیں بڑھ کر بحیرہ احمر اور بحیرہ روم کے مشرق تک جا پہنچی ہیں۔ یہ سب ہمارے شہیدوں کے لہو کے دم سے ہوا ہے"۔

ایران نے گزشتہ ہفتے "الفاتحین بریگیڈز" کے نام سے ایک نئی فورس تشکیل دینے کا اعلان کیا تھا جس کی بنیادی ذمے داری اندرون اور بیرون ملک "ولایت" یعنی مرشد اعلی علی خامنہ کی حفاظت کرنا ہے۔