.

"حزب الله" کا شام میں ملیشیاؤں کے لیے عون کی سپورٹ کا دعوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان میں "حزب الله" کے نزدیک شمار کیے جانے والے روزنامے " الاخبار" نے شام میں "حزب الله" ملیشیاؤں کی شرکت کے لیے میشیل عون کی سپورٹ کے حوالے سے ایک رپورٹ شائع کی ہے۔ یہ رپورٹ ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب کہ عون کے بطور صدر پہلے خطاب میں اس طرح کی کوئی بات نہیں کی گئی۔

ایسا لگتا ہے کہ لبنان میں سیاسی موافقت اور نئے صدر میشیل عون کی ماضی کے مخاصمین کے ساتھ قربت حزب اللہ کو پسند نہیں آئی جو ہر موقع پر اپنے سیاسی حلیف کی کامیابی پر زور دیتی رہی ہے۔

صدر میشیل عون کے صدارتی خطاب کے حوالے سے لبنان کی فضاؤں میں اطمینان کی لہر نظر آرہی ہے جس میں صاف طور پر "شام میں حزب اللہ کی ملیشیاؤں کے لیے سپورٹ کے الفاظ" غائب تھے۔ تاہم روزنامہ "الاخبار" نے خطاب کے زاویوں کو گھما کر اسرائیل کے خلاف مزاحمت کے لیے صدر کی سپورٹ کے تجزیے کا فیصلہ کیا۔ اخبار نے میشیل عون کے اس قول کو کہ وہ دہشت گردی کے خلاف لڑیں گے ، اس کھاتے میں ڈال دیا کہ یہ شام میں "حزب الله" کی ملیشیاؤں کے لیے سپورٹ کا اظہار ہے۔

لبنان کے نئے صدر نے "حزب الله" کی خواہشات کے عین برعکس باور کرایا کہ وہ طائف معاہدے )1989( کی پاسداری کریں گے۔ اس پر حزب اللہ کے ذرائع ابلاغ کو محسوس ہوا کہ اس امر کی پھر سے تشہیر کی جائے کہ میشیل عون شام میں اس کی ملیشیاؤں کی موجودگی کے حامی ہیں۔