.

سیریئن ڈیموکریٹک فورسز کا الرقہ آپریشن شروع کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں سیریئن ڈیموکریٹک فورسز نے الرقہ شہر کو داعش تنظیم سے آزاد کرانے کے لیے معرکے کے آغاز کا اعلان کیا ہے۔

ڈیموکریٹک فورسز نے باور کرایا ہے کہ شام میں داعش کے گڑھ کو آزاد کرانے کا یہ معرکہ شام اور عراق میں امریکا کے زیر قیادت بین الاقوامی اتحاد کے ساتھ کوآرڈی نیشن سے ہو گا۔

ڈیموکریٹک فورسز نے واضح کیا ہے کہ عالمی برادری کی جانب سے الرقہ آپریشن کے لیے عسکری سپورٹ پیش کیے جانے کے وعدے بھی کیے گئے ہیں۔ فورسز نے زور دیا ہے کہ وہ انفرادی طور پر الرقہ کے معرکے میں شریک ہو گی۔

دوسری جانب فرانس کے وزیر دفاع جان ایف لو دریاں نے اتوار کے روز کہا ہے کہ داعش تنظیم کے خلاف بر سرپیکار بین الاقوامی اتحاد پر لازم ہے کہ وہ عراق میں موصل آپریشن کے ساتھ شام میں داعش کے گڑھ الرقہ شہر میں تنظیم کے خلاف معرکے کا آغاز کرے۔ یورپ ریڈیو 1 سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ " میں سمجھتا ہوں کہ یہ بہت ضروری ہوگا"۔

اس کے علاوہ لو دریان نے ، جن کا ملک داعش کے خلاف بین الاقوامی اتحاد میں دوسرا بڑا حصہ دار ہے، باور کرایا ہے کہ موصل کا معرکہ طویل اور پیچیدہ ہوسکتا ہے اس لیے کہ دہشت گرد مقامی آبادی کے درمیان روپوش ہو رہے ہیں۔