.

موصل کا جنوب مشرقی علاقہ داعش کے ہاتھ سے نکل گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں انسداد دہشت گردی فورس کے کمانڈر عبدالوہاب الساعدی کا کہنا ہے کہ عراقی فورسز موصل کے جنوب مشرقی علاقے الانتصار سے داعش تنظیم کو نکالنے کے بعد علاقے میں داخل ہو گئی ہیں۔

مذکورہ علاقے میں داخل ہونے کا مشن وزارت دفاع کے زیر انتظام نائنتھ آرمرڈ ڈویژن کی فورسز کے پاس تھا جو انہیں نے پورا کیا۔

ادھر وفاقی پولیس کی قیادت کا کہنا ہے کہ اس کے عسکری آپریشنوں کے نتیجے میں حمام العلیل کی جانب 11 مرکزی دیہات کو واپس لے لیا گیا ہے جو موصل کے جنوب میں داعش تنظیم کی آخری دفاعی لائن شمار کیا جاتا ہے۔ بیان کے مطابق عراقی فورسز موصل کے جنوب میں صرف 4 کلومیٹر دوری پر ہیں۔

وفاقی پولیس نے بتایا کہ داعش کے 35 ارکان مارے جا چکے ہیں جب کہ دھماکا خیز مواد سے بھری 17 سے زیادہ گاڑیاں تباہ کی جا چکی ہیں اور درجنوں دھماکا خیز آلات کو ناکارہ بنایا جا چکا ہے۔ اس کے علاوہ حمام العلیل کے اطراف میں 200 مربع کلومیٹر کا علاقہ کلیئر کیا جا چکا ہے۔

وفاقی پولیس کے بیان کے مطابق اب تک 400 خاندانوں کو علاقے سے بحفاظت نکال لیا گیا ہے جن کو داعش تنظیم انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کر رہی تھی۔