.

مصر : "سيلفی" کے دوران دو لڑکیاں چوتھی منزل سے گر گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے شمالی صوبے بورسعید میں ایک الم ناک واقعے میں دو نوجوان لڑکیاں "سيلفی" کے سبب عمارت کی چوتھی منزل سے نیچے گر کر شدید زخمی ہو گئیں اور اب زندگی اور موت کے درمیان کشمکش میں ہیں۔

علاقے کی آبادی میں ایک عینی شاہد نے "العربیہ ڈاٹ نیٹ" کو بتایا کہ محمد علی اسٹریٹ پر تیموریہ اسکول کے سامنے چلنے والے پیدل افراد کو یک دم زمین پر کسی چیز کے زور دار طریقے سے گرنے کی آواز سنائی دی جس کے فورا بعد ایک اور آواز اور انسانی چیخ سنی گئی۔ جائے مقام پر پہنچ کر دیکھا گیا تو دو لڑکیاں زمین پر خون میں لت پت پڑی تھیں۔ انہیں فوری طور پر بورسعید جنرل ہسپتال منتقل کیا گیا اور بعد ازاں حالت تشویش ناک ہونے کے سبب قاہرہ کے دو بڑے ہسپتالوں میں پہنچایا گیا۔

سکیورٹی ادارے کی تحقیقات سے معلوم ہوا کہ مذکورہ دونوں لڑکیاں التوحید ٹاور کی چوتھی منزل پر واقع ایک فلیٹ کی بالکونی میں سیلفی تصویر لینے کی کوشش کر رہی تھیں جس کے دوران ان کا توازن بگڑ گیا اور دونوں زمین پر جا گریں۔ لڑکیوں کے نام روان السيد حسن اور سارة لطيف ہیں اور دونوں کی عمر پندرہ برس ہے۔

زخمی ہونے والی دونوں لڑکیوں کی ایک مشترکہ دوست امیرہ الشامی نے اپنے فیس بک کے صفحے پر بتایا ہے کہ اس کی دونوں دوستوں کی ریڑھ کی اور پیڑو (Pelvis) کی ہڈیوں میں فریکچر ہوئے ہیں اور سر کے اندر بند چوٹیں آئی ہیں۔

دوسری جانب طبی ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں لڑکیوں کی حالت تشویش ناک ہے اور انہیں جب لایا گیا تو ان کے چہرے کے علاوہ ریڑھ کی ہڈی اور پیڑو کی ہڈی میں فریکچر ہوچکے تھے جب کہ دماغ میں خون بھی جم گیا تھا۔