.

یمن : عرب اتحاد کا 48 گھنٹوں کی فائر بندی کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں آئینی حکومت کی سپورٹ کرنے والے عرب اتحاد نے یمن میں 48 گھنٹوں کی فائربندی کا اعلان کیا ہے۔ اتحادی افواج کی کمان قیادت کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ فائر بندی کا آغاز ہفتے کی دوپہر مقامی وقت کے مطابق 12 بجے ہوگا اور مسلح ملیشیاؤں کی جانب سے پاسداری کی صورت میں اس میں خود ہی توسیع ہو جائے گی۔

مذکورہ جنگ بندی میں یمن میں محاصرہ زدہ علاقوں میں امدادی سامان کے داخلے کی اجازت شامل ہے ، ان علاقوں میں تعز شہر سرفہرست ہے۔ اس دوران امن اور کوآرڈی نیشن کمیٹی میں شامل باغیوں کے نمائندے جنوبی ظہران آئیں گے۔

یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی کی جانب سے سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو ایک خط موصول ہوا ہے۔ اس میں انہوں نے بتایا ہے کہ مذکورہ اقدامات یمن میں امن کو یقینی بنانے کے لیے اقوام متحدہ اور عالمی برادری کی کوششوں کے جواب میں کیے گئے ہیں۔

یمنی صدر کے خط میں ضمانت دی گئی ہے کہ اتحادی افواج فائربندی کی پاسداری کریں گی۔ تاہم حوثی ملیشیاؤں اور ان کی ہمنوا فورسز کی جانب سے کسی بھی علاقے میں کسی قسم کی بھی عسکری کارروائی کو بھرپور انداز سے روکا جائے گا۔ اس دوران حوثی ملیشیاؤں کی نقل و حرکت کی فضائی نگرانی کی جائے گی۔