.

سعودی وزیر محنت کو عہدے سے کیوں ہٹایا گیا؟

الحقبانی کے دور میں مملکت میں بے روزگاری میں اضافہ ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیزکے خصوصی شاہی فرمان کے تحت متعدد اہم حکومتی عہدیداروں کو تبدیل کیا گیا ہے۔ ان میں اہم ترین تبدیلی وزیرمحنت و بہبود آبادی کی بھی شامل ہے۔

شاہی فرمان کے تحت ڈاکٹر مفرج الحقبانی کو وزارت محنت بہبود آبادی کے عہدے سے ہٹا کر ان کی جگہ علی الغفیص کو نیا وزیرمحںت مقرر کیا گیا ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق الحقبانی کو ان کے عہدے سے ہٹائے جانے کی متعدد اہم وجوہات ہیں۔ ان میں اہم ترین وجہ ان کا ویژن 2030ء کے اہداف پورے کرنے میں ناکام رہنا اور سعودی نوجوانوں میں بے روزگاری میں اضافہ بھی ہے۔

جب سے ڈاکٹر مفرج الحقبانی نے وزارت محنت کا قلم دان سنھبالا ملک میں سعودی نوجوانوں میں بے روزگاری میں اضافہ ہوا۔

اعدادو شمار کے مطابق سنہ 2015ء کی پہلی ششماہی کے دوران سعودی عرب میں ملازمت کے 71 ہزار مواقع پیدا ہوئے۔ دوسری میں اس میں کمی آئی اور یہ تعداد 35 ہزار تک آگئی، تیسری ششماہی میں 14 ہزار اور سال کی آخری ششماہی میں معمولی اضافے کے بعد یہ تعداد 26 ہزار پرآگئی تھی۔

اس طرح پہلی ششماہی میں پانچ ہزار، دوسری میں 10 ہزار اور تیسری چوتھائی میں یہ تعداد کم ہو کر 27 ہزار پر آ گئی تھی۔ سنہ 2016ء کے دوران سعودی عرب میں ملازمت کے مواقع میں کمی کی ایک وجہ غیر سعودی باشندوں کا ملازمتوں پر فائز ہونا بھی رہا۔ سبکدوش وزیر برائے لیبر سعودی شہریوں کو معقول روزگار کی فراہمی میں ناکام رہے۔