.

شامی فوجیوں کی علوی قبیلے کے مذہبی بانی کی قبر پرحاضری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کی حکمران علوی قبیلے کے ساتھ مذہبی وابستگی ان کی مذہبی ذمہ داریوں میں شامل ہے۔ یہی وجہ ہے کہ شامی فوجیوں کی بڑی تعداد حلب میں علوی قبیلے کے مذہبی پیشوا الشیخ ابوعبداللہ الحسن بن حمدان الخصیبی کی قبر حاضری کو یقینی بنانے کی کوشش کرتی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شام میں ذرائع ابلاغ اور سوشل میڈیا پر آنے والی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شامی فوج میں شامل کرنل سہیل الحسن کی زیرکمان النمر فورسز کے اہلکاروں نے گذشتہ روز حلب میں علوی قبیلے مذہبی پیشوا الشیخ ابو عبداللہ الحسین بن حمدان الخصیبی کی قبر کی زیارت کی۔

’جبلۃ الاخباریہ‘ خبر رساں ایجنسی کے سماجی رابطے کے صفحے پر پوسٹ ایک بیان کے ساتھ دو تصاویر بھی پوسٹ کی گئی ہیں۔ ان میں سے ایک تصویر میں شامی فوجیوں کو علوی قبیلے کے مذہبی بانی کی قبر پر دیکھا جاسکتا ہے۔ قبر پر سبز رنگ کی چادر دکھائی دیتی ہے اور اس کے گرد شامی فوجیوں کا ایک گروپ موجود ہے۔

خیال رہے کہ علوی قبیلے کے مذہبی بانی الشیخ الخصیبی کے بارے میں تاریخی روایات سے معلوم ہوتا ہے کہ وہ 260ھ کو پیدا ہوئے اور 358ھ میں حلب میں وفات پائی۔ انہیں شام میں علوی قبیلے کے مذہب کا بانی کہا جاتا ہے اور شام میں موجودہ برسراقتدار بشارالاسد خاندان بھی مسلکی طور پر اسی قبیلے سے تعلق رکھتا ہے۔ یہی وجہ شامی فوج بھی الشیخ الخصیبی کے ساتھ گہری مذہبی وابستگی رکھتی ہے.