.

مابعد داعش عراق کے لیے کوئی حکمت عملی تیار نہیں کی:علاوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے نائب صدر ایاد علاوی نے حکومتی کمزوریوں کا اعتراف کیا ہے اور کہا ہے کہ شمالی شہر موصل میں جاری آپریشن میں داعش کی شکست کے بعد حکومت نے پیش آئند حالات کے لیے کوئی تیاری نہیں کی ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عراق کے نائب صدر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ دہشت گردی کے موصل سے نکل جانے کے بعد آئندہ کی حکمت عملی کے حوالے سے حکومت نے کوئی رڈ میپ تیار نہیں کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ موصل کا معرکہ دو الگ الگ نتائج پر منتج ہوسکتا ہے۔ یا تو یہ جنگ عراقی قوم میں اتحاد کا ذریعہ بنے گی یا ملک کو مزید سیاسی انارکی کا شکار کرے گی۔

ادھر موصل میں جاری فوجی آپریشن کے دوران عراقی فورسز نے موصل کے بائیں ساحلی کنارے کی مزید 31 کالونیوں کا کنٹرول سنھبال لیا ہے۔ داعش کو ان حملوں میں بھاری جانی نقصان بھی اٹھانا پڑا ہے۔

عراقی فوج کے قائم کردہ مشترکہ کنٹرول روم کے بیان کے مطابق عراقی فوج موصل کے مرکزی پلوں سے محض دو کلو میٹر کی مسافت پر ہیں۔ جنگی طیارے مشرقی موصل میں داعش کے ٹھکانوں پر مسلسل حملے کررہے ہیں۔