.

شام: الباب کے نزدیک لڑائی اور حملوں میں داعش کے 68 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمالی صوبے حلب میں واقع قصبے الباب اور اس کے نواح میں باغیوں اور داعش کے درمیان لڑائی میں شدت آگئی ہے اور ترک فوج کے لڑاکا طیاروں نے بھی داعش کے ٹھکانوں پر بمباری جاری رکھی ہوئی ہے جس کے نتیجے میں گذشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران میں داعش کے مزید اڑسٹھ جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

ترک فوج نے ہفتے کے روز ایک بیان میں اطلاع دی ہے کہ الباب کے نزدیک جمعہ کی رات کے بعد سے لڑائی اور فضائی حملوں میں داعش کے اڑسٹھ جنگجو ''ٹھنڈے'' کر دیے گئے ہیں۔

ترکی کے لڑاکا طیاروں نے فضائی حملوں میں داعش کے 141 اہداف اور ایک فوجی ہیڈکوارٹر کو نشانہ بنایا ہے اور انھیں بمباری کرکے تباہ کردیا ہے۔لڑائی میں ترکی کے حمایت یافتہ دو باغی جنگجو ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا ہے۔

ترکی کے حمایت یافتہ شامی باغیوں نے گذشتہ کئی ہفتوں سے الباب کا محاصرہ کررکھا ہے۔گذشتہ بدھ کو خونریز لڑائی میں بیس ترک فوجی اور داعش کے ایک سو اڑتیس جنگجو ہلاک ہوگئے تھے۔

ترکی کی سرحد سے پچیس کلومیٹر دور واقع اس قصبے پر قبضے کے لیے ترک فوج اور اس کے حمایت یافتہ شامی باغیوں کو داعش کی سخت مزاحمت کا سامنا ہے۔شام کے شمالی علاقے میں داعش کے خلاف گذشتہ چار ماہ سے جاری کارروائی کے دوران میں ترک فوج کا ایک دن میں یہ سب سے زیادہ جانی نقصان تھا۔

داعش کے جنگجو ترک فوج اور ان کے اتحادی جنگجوؤں کا خودکش بم حملوں یا بارود سے بھری گاڑیوں کے ذریعے مقابلہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ترک فوج کے بیان کے مطابق الباب کے نواح میں واقع پہاڑی علاقے میں داعش کے جنگجوؤں کے ساتھ شدید جھڑپیں جاری ہیں۔داعش اس علاقے میں واقع ایک اسپتال کو ایک اسلحہ ڈپو کے طور پر استعمال کرتے رہے ہیں۔