.

شام: بیٹی کو دمشق میں خودکش حملے پر اکسانے والا باپ قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق میں اپنی بارہ سالہ بیٹی کو خودکش بم حملے کے لیے بھیجنے والے انتہا پسند باپ کو تشرین کے علاقے میں نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کرکے قتل کردیا ہے۔

برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کو ملنے والی اطلاع کے مطابق نامعلوم مسلح افراد نے اتوار کو عبدالرحمان الشداد المعروف ابو نمر السوری کو گولیوں کا نشانہ بنایا تھا۔

ابو نمر اور اس کی اہلیہ نے دس بارہ روز قبل آن لائن اپنی ایک ویڈیو جاری کی تھی۔اس میں وہ دونوں اپنی دو کم سن بچیوں کو دارالحکومت دمشق میں خودکش بم حملے کی ترغیب دے رہے تھے۔اس ویڈیو پر مبنی خبر کو عالمی میڈیا میں شہ سرخیوں کے ساتھ شائع اور نشر کیا گیا تھا۔

شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا کے مطابق اس جوڑے کی ایک بیٹی نے اس ماہ کے اوائل میں دمشق میں ایک پولیس اسٹیشن پر خود کو دھماکے سے اڑا دیا تھا۔ابو نمر کا دمشق کے نزدیک واقع علاقے الغوطہ سے تعلق تھا اور اس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ ماضی میں القاعدہ سے وابستہ تنظیم النصرۃ محاذ کا سابق رکن رہ چکا تھا۔