.

شام : داعش کے ہاتھوں عمر رسیدہ شخص کا سر قلم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی نیوز ویب سائٹ "میل آن لائن" کے مطابق شام کے دارالحکومت دمشق کے شمال میں واقع ایک علاقے کی تصاویر منظر عام پر آئی ہیں جن میں داعش تنظیم کا رکن ایک عمر رسیدہ قیدی کا سر قلم کرنے کا حکم جاری کر رہا ہے۔ مذکورہ قیدی کو اس بنیاد پر حراست میں لیا گیا تھا کہ وہ ایک جادوگر یا عامل ہے جو ناپسندیدہ طریقوں سے علاج کرتا ہے۔

تصویر میں رنگی ہوئی داڑھی والا داعشی شہر کے ایک میدان میں کھڑا لاؤڈ اسپیکر پر اعلان کر رہا ہے تاکہ وہاں موجود حاضرین کو اس قیدی کا جرم معلوم ہو جائے۔

ایک دوسری تصویر میں ملزم قیدی کی آنکھوں پر پٹی بندھی ہوئی ہے اور دو نقاب پوش افراد نے اس کو لکڑی کے ایک گول ٹکڑے پر جھکایا ہوا ہے۔ اسی منظر میں جلاد مذکورہ شخص کی گردن اڑانے کے لیے تلوار کو ہوا میں بلند کیے ہوئے نظر آ رہا ہے۔

قیدی پر عائد الزام کے بارے میں اعلان پڑھ کر سنانے والے شخص کی شہریت نہیں معلوم ہو سکی۔ داعش تنظیم جادو اور سحر کی کارروائیوں کو بڑا جرم شمار کرتی ہے۔

ان تصاویر کا اجراء داعش تنظیم کی جانب سے ایک رپورٹ کے ذریعے کیا گیا جس کا نام "مسلمانوں کی موجودگی میں اللہ کے حکم پر عمل درامد" ہے۔

حسب عادت ملزم کو موت کے گھاٹ اتارے جانے پر عمل درامد درجنوں لوگوں کے سامنے کیا گیا تاکہ عوام کو عبرت حاصل ہو۔ ایک تیسری تصویر میں عمر رسیدہ ملزم کا کٹا ہوا سر اس کی لاش پر رکھا ہوا ہے۔

دہشت گرد تنظیموں پرنظر رکھنے والے ذرائع کے مطابق اس سزا پر عمل درامد داعش تنظیم کے زیر انتظام گروپ "جيشِ خالد بن الوليد" نے کیا۔ یہ گروپ رواں برس مئی میں منظر عام پر آیا جب شامی حکومت نے دمشق کے شمال مغرب میں واقع علاقے وادی بردی پر فضائی بم باری کو شدید کر دیا تھا۔ یہ علاقہ دمشق کے ایک بڑے حصے کو پانی کی فراہمی کا مرکزی ذریعہ سمجھا جاتا ہے۔