.

موصل میں عراقی فوج کا آپریشن، 25 داعشی جنگجو ہلاک

شہر کے مشرق میں عراقی فوج کی پیش قدمی، جنوب میں داعش کی شدید مزاحمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کی فیڈرل پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ شمالی شہر موصل میں داعش کے خلاف جاری فیصلہ کن آپریشن میں تازہ لڑائی کے دوران کم سے کم پچیس جنگجو ہلاک اور دسیوں زخمی ہوگئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عراقی پولیس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ موصل کے بائیں کنارے کی کالونیوں میں داعش کو شکست کا سامنا ہے اور جنگجو اپنے ٹھکانے چھوڑ کر فرار ہو رہے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ معرکہ موصل کے دوسرے مرحلے کے دوسرے دن مشرقی موصل کی کئی کالونیوں کو داعش سے چھڑایا گیا ہے۔ شہر کے جنوبی محاذ پر داعش کی پوزیشن تاحال مضبوط ہے اور جنگجو پوری قوت کے ساتھ مزاحمت کررہے ہیں۔ جگہ جگہ بچھائی گئی بارودی سرنگیں عراقی فوج کی پیش قدمی کی راہ ایک بڑی رکاوٹ ہیں۔

خیال رہے کہ عراقی فوج اور پولیس نے اتحادی فوج کی معاونت سے یکم اکتوبر موصل میں داعش کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا۔ دو روز پیشتر عراقی فوج نے موصل میں داعش کے خلاف کارروائی کا پہلا مرحلہ مکمل کرنے کےبعد دوسرے اور آخری مرحلے کا اعلان کیا ہے۔

دوسرے مرحلے میں عراقی فوج کے ہمراہ امریکی عسکری مشیران بھی موجود ہیں۔ عراقی حکومت نے موصل آپریشن کے لیے 5000 اہلکاروں کا اضافہ کیا ہے۔ فیڈرل پولیس کے اہلکاروں کی بڑی تعداد اس کے سوال ہے۔ عراقی فورسز کا کہنا ہے کہ انہوں نے تازہ لڑائی میں القدس اور الکرامہ کالونیوں کی طرف فاتحانہ پیش قدمی کی ہے۔

خونی جنگ نے داعش کو کمزور کیا

عراق سے ’العربیہ‘ کے نامہ نگار کے مطابق عراق کی جوائنٹ فورسزنے اتحادی فوج کے فضائی حملے روکنے کے باوجود داعش کو غیرمعمولی نقصان پہنچایا ہے اور خونی حملوں میں داعشی جنگجوؤں کی کمر توڑ دی گئی ہے۔

العربیہ کے نامہ نگار کے مطابق موصل میں داعش کے خلاف فیصلہ آپریشن میں اتحادی فوج کے فضائی حملوں کا بھی اہم کردار ہے۔ فضائی بمباری نے داعش کے عسکری مراکز کو بے پناہ نقصان پہنچایا اور تنظیم کو مادی اور معنوی اعتبار سےغیرمعمولی نقصان سے دوچار کیا ہے۔ بالخصوص بائیں ساحلی پٹی سے داعش کو پسپا ہونا پڑا ہے۔ بائیں کنارے سے داعشی جنگجو دائیں طرف کے مغربی کنارے کی سمت فرار ہو رہے ہیں۔

شہر کے مشرق میں اہم تزویراتی کالونی القدس کے کچھ حصوں پرقبضے نے مشرقی محاذ پر داعش کو مزید کمزور کردیا ہے۔ القدس کالونی کے بالمقابل الکرامہ کالونی کی طرف پیش کی تیاریوں کے باوجود داعشی فورسز کو روکنے کے لیے طاقت کا بھرپور استعمال کررہے ہیں۔ مقامی ذرائع کے مطابق الکرامہ کالونی کے اطراف میں صورت حال اب بھی واضح نہیں ہے۔