.

بغداد : مصروف بازار میں دو خود کش بم دھماکے ، 28 افراد ہلاک

سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے دونوں بم دھماکوں کی ذمے داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے دارالحکومت بغداد کے ایک مصروف بازار میں دو بم دھماکوں کے نتیجے میں 28 افراد ہلاک اور تقریبا 50 زخمی ہو گئے ہیں۔سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے دونوں بم دھماکوں کی ذمے داری قبول کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

ایک سرکاری عہدہ دار کے مطابق ہفتے کی صبح السنک مارکیٹ میں دھماکا خیز مواد سے بھری بیلٹیں باندھے دو دہشت گردوں نے خود کو اڑا دیا۔ پولیس نے بتایا کہ دونوں دھماکے گاڑیوں کے فاضل پرزہ جات کی دکانوں کے نزدیک ہوئے ہیں۔

عینی شاہدین کے مطابق پہلا دھماکا مارکیٹ کے اندر ہوا جہاں خرید و فروخت کے لیے لوگوں کافی تعداد میں موجود تھے جب کہ دوسرا دھماکا اس کے کچھ دیر بعد اس وقت ہوا جب امدادی کارکن لاشوں اور زخمیوں کو منتقل کرنے میں مصروف تھے۔یاد رہے کہ السنک کا علاقہ عراق کا ایک اہم کاروباری مرکز ہے۔

جمعرات کے روز بھی بغداد کے دو مختلف علاقوں میں دو کار بم دھماکے ہوئے تھے جن میں پانچ افراد اپنی جاںوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ دارالحکومت کے جنوبی علاقے المعالف میں نامعلوم افراد نے بارود سے بھری گاڑی سڑک کے کنارے چھوڑ دی تھی جو کچھ دیر بعد دھماکے سے تباہ ہو گئی۔ واقعے میں تین افراد ہلاک اور آٹھ زخمی ہو گئے۔دوسرادھماکا بغداد کے مشرقی علاقے العماری میں ایک سڑک کے کنارے ہوا جس سے دو افراد ہلاک اور چار زخمی ہوگئے تھے۔