.

شام میں جنگ بندی کی مانیٹرنگ، روس - ترکی کا نیا فارمولہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں حکومت اور اپوزیشن کےدرمیان سیز فائر کے ایک ہفتے کے روزانہ کی بنیاد پر اس کی خلاف ورزیاں بھی جاری ہیں جنگ بندی معاہدے کے دو بڑے ضامنوں روس اور ترکی نے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کی مانیٹرنگ کے لیے ایک لائحہ عمل وضع کیا ہے۔

العربیہ ٹی وی چینل کو روس اور ترکی کے شام میں جنگ بندی برقرار رکھنے کے فارمولے کی تفصیلات ملی ہیں:

دونوں ممالک شام میں جنگ بندی کی فضائی مانیٹرنگ کے لیے مصنوعی سیاروں سے کام لیں گے۔

جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کے مقامات کے تعین کے لیے بغیر پائلٹ ڈرون کا استعمال کیا جائےگا۔

باغیوں اور حکومتی زیرکنٹرول علاقوں کے نقاط تماس اور سرحدوں کی ڈرون سے مانیٹرنگ کی جائے گی۔

کشیدگی کا شکار ہونے والے علاقوں کے نقشوں کا مسلح افواج کے نقشوں سےموازنہ کیا جائےگا۔

ترک ذرائع ابلاغ کے مطابق ماسکو اور انقرہ نے شام میں جنگ بندی کو یقینی بنانے کے لیے شام کی سرزمین پرمشترکہ مانیٹرنگ ٹیمیں، جھڑپوں سے متاثرہ مقامات، حساس جگہوں اور لڑائی والے مقامات کے اطراف میں روسی اور ترک فوجی بھی تعینات کیے جائیں گے۔

شام میں جنگ بندی کی مانیٹرنگ کے لیے روس اپنے شمال مغربی فوجی اڈے ’اسکی شہر‘ کو استعمال کرے گا جب کہ روس اللاذقیہ کے میں قائم ’’حمیمیم‘‘ فوجی اڈے ہی کو بدستور استعمال کرے گا۔

فائرنگ بندی کی خلاف ورزیوں کی روک تھام کے لیے ایک مشترکہ شکایات سیل قائم کیا جائے گا۔ دونوں ملک شام میں جنگ بندی میں ملوث عناصرکے خلاف کارروائی کے لیے ان حامی قوتوں پر دباؤ ڈالا جائے گا تاکہ آئندہ کے لیے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کی روک تھام کی جاسکے۔