یمن : اتحادی بم باری میں باغیوں کا راکٹ لانچر تباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں سرکاری فوج اور عوامی مزاحمت کاروں کی مخلتف محاذوں پر حوثی اور معزول صالح کی ملیشیاؤں کے خلاف پیش قدمی جاری ہے۔ اس دوران عرب اتحادی طیاروں کی جانب سے معاونت کے طور پر باغیوں کے ٹھکانوں اور کمک کو مسلسل نشانہ بنایا جا رہا ہے جس کے نتیجے میں ملیشیاؤں کو بھاری جانی و مادی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔

گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دران عرب اتحادی جنگی طیاروں نے یمن میں حوثی اور معزول صالح کی ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر 20 سے زیادہ حملے کیے۔

فوجی ذرائع کے مطابق یہ حملے صعدہ ، لحج اور تعز میں کیے گئے۔ اس دوران تعز صوبے کے ضلع ذباب اور العمری کیمپ کو نشانہ بنایا گیا۔ اس کے علاوہ باب المندب کے مشرق میں باغیوں کے ایک راکٹ لانچر اور متعدد فوجی گاڑیوں کو بھی تباہ کر دیا گیا۔ کارروائی سے قبل باغیوں نے باب المندب کے مشرق میں واقع علاقے کہبوب میں سرکاری فوجی اور عوامی مزاحمت کاروں کے ٹھکانوں کو بیلسٹک میزائل کا نشانہ بنایا تھا۔

یمنی فوج نے شبوہ صوبے میں بیحان کے محاذ پر اپنی پیش قدمی جاری رکھی جہاں کئی روز سے لڑائی کا سلسلہ جاری ہے۔ یمنی فوج نے وادی بیحان میں واقع پہاڑی سلسلے کو آزاد کرائے جانے کا اعلان کیا ہے۔

تعز میں یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کاروں نے صوبے کے مغرب میں واقع ضلعے مقبنہ میں باغی ملیشیاؤں کو متعدد تزویرانی ٹھکانوں اور بلند مقامات سے پیچھے دھکیل کر ہزیمت سے دوچار کیا۔

معرکوں میں جنجگو ملیشیاؤں کے متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہوئے۔ دوسری جانب باغی ملیشیاؤں نے تعز شہر کے متعدد حصوں میں رہائشی علاقوں کو گولہ باری کا نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری رکھا۔ مقامی ذرائع کے مطابق اس دوران تعز کے مغربی علاقے میں ملییشاؤں کے ارکان کی فائرنگ کے نتیجے میں اسکول سے واپس آنے والی ایک بچی جاں بحق اور دوسری زخمی ہو گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں