.

شام کے سرکاری مفتی بشارالاسد کو ’مرحوم‘ کہہ بیٹھے!

مفتی بدرالدین حسون کی تاجروں سے بشارالاسد کی مالی امداد کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے سرکاری مفتی علامہ بدرالدین حسون اپنی لفظی موشگافیوں کی وجہ سے اکثر ذرائع ابلاغ کی توجہ کا مرکز رہتے ہیں۔حال ہی میں موصف اپنے ممدوح ’بشارالاسد‘ کو بھی ’مرحوم‘ کہہ بیٹھے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق ہوا یوں کہ شام میں جاری ماہ کی نو تاریخ کو ایک تقریب میں تاجروں اور صنعت کاروں کو مدعو کیا گیا تھا۔ اس موقع پر جنگ میں زخمی ہونے والے فوجی اہلکار بھی موجود تھے۔ تقریب میں خصوصی خطاب کے لیے مفتی بدرالدین حسون کو مدعو کیا گیا۔

انہوں نے اپنی تقریر کے دوران بشارالاسد کے والد ’حافظ الاسد‘ کے بجائے ان کے بیٹے ’بشار الاسد‘ کا نام لینے کے ساتھ انہیں مرحوم کہہ دیا۔ اس پر ہال میں موجود تمام شرکاء نے مفتی حسون کی ’غلطی‘ کی تالیوں کی گونج میں’داد‘ پیش کی۔ تاہم مفتی حسون کو جلد ہی اپنی زبان کی پھلسن کا اندازہ ہوگیا اور انہوں نے فوری طور پر اصلاح کرتے ہوئے’حافظ الاسد رحمۃ اللہ‘ کہا۔

تقریب میں مفتی حسون نے شامی تاجروں پر زور دیا کہ وہ معاشی ابتری کا شکار شامی حکومت کو سہارا دینے میں دمشق کی مدد کریں۔ انہوں نے زخمی فوجیوں سے ایک ایک کر کے مصافحہ بھی کیا اور ان کے ہاتھوں کو بوسہ بھی دیا۔