سعودی عرب: دہشت گردی میں ملوث خطرناک اشتہاری گرفتار

حسین الفرج کا تعلق سعودی عرب سے ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کی سیکیورٹی فورسز نے مملکت کی مشرقی گورنری القطیف میں سرچ آپریشن کے دوران ایک اشتہاری دہشت گرد کو حراست میں لینے کے بعد تفتیش کے لیے متعلقہ حکام کے حوالے کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی وزارت داخلہ کے ترجمان نے کل منگل کوبتایا کہ ایک مقامی شدت پسند اور اشتہاری حسین محمد الفرج کو القطیف میں ایک چھاپہ مار کارروائی کے دوران پکڑا گیا۔ گرفتار ہونے والا شدت پسند ملک میں دہشت گردی، تخریب کاری، معصوم شہریوں پر فائرنگ کرنے، پبلک مقامات پر شرپسندی پھیلانے اور دہشت گردوں کی معاونت میں ملوث رہا ہے۔ سعودی پولیس اسے ایک عرصے سے تلاش کررہی تھی اور اس کی گرفتاری کے لیے جگہ جگہ چھاپے مارے جا رہے تھے۔

بیان میں دہشت گرد عناصر کو یہ پیغام دیا گیا ہے کہ وہ اپنی مجرمانہ سرگرمیوں سے باز نہ آئے توانہیں ہرجگہ سے ڈھونڈ قانون کے کٹہرے میں لایا جائے گا اور ملک میں شر فساد پھیلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

بیان میں تمام اشتہاریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ ہتھیار ڈال کر خود کو قانون کے حوالے کردیں۔ پولیس کی جانب سے شہریوں کو دہشت گردوں کے بارے میں معلومات فراہم کرنے کے لیے ایمرجنسی رابطہ نمبر990 جاری کیا گیا ہے اور ساتھ ہی کہا گیا ہے کہ دہشت گردوں کے بارے میں معلومات فراہم کرنے والے شہریوں کو انعامات بھی دیے جائیں گے۔

خیال رہے کہ گذشتہ برس اکتوبر میں سعودی وزرات داخلہ نے قطیف کے ایک دہشت گرد سیل کو اشتہاری قرار دے کران کی تصاویر جاری کی تھیں اور ان میں سے کسی دہشت گرد کے بارے میں معلومات فراہم کرنے پر ایک ملین ریال کا انعام مقرر کیا گیا تھا۔ سعودی عرب کی حکومت نے خطرناک دہشت گردوں کے بارے میں معلومات دینے پر پانچ ملین اور دہشت گردی کی کارروائی ناکام بنانے میں معاونت پر سات ملین ریال کا انعام مقرر کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں