.

گوانتانامو کے سابق قیدی نے سعودی عرب پہنچ کر کیا کہا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

گوانتانامو بے کا سابق قیدی جبران القحطانی جمعرات کے روز سعودی عرب پہنچ گیا۔ مملکت پہنچنے کے فوری بعد اپنے پہلے بیان میں جبران نے کہا کہ " میری واپسی کے واسطے سعودی قیادت بالخصوص خادم حرمین شریفین نے جو کچھ کیا میں اس پر ان کا شکر گزار ہوں"۔ جبران نے مزید کہا کہ "میں مملکت کا فرزند ہوں"۔

اس سے قبل سعودی وزارت داخلہ میں سکیورٹی ترجمان نے گوانتانامو بے میں قید ایک سعودی شہری کی واپسی کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ جبران القحطانی جمعرات کے روز مملکت پہنچا۔

سکیورٹی ترجمان کے مطابق جبران کے اہل خانہ کو اس امر سے آگاہ کر دیا گیا تھا اور اس سے ملاقات کے لیے تمام تر انتظامات کر دیے گئے۔ ترجمان نے بتایا کہ رہائی پانی والے شہری کو سعودی عرب میں فافذ العمل قوانین کا سامنا کرنا ہوگا جس میں محمد بن نایف سینٹر فار کاؤنسلنگ اینڈ کیئر کے پروگرام سے استفادہ شامل ہے۔

جبران القحطانی گوانتانامو بے سے رہائی پانے والا 126 واں سعودی شہری ہے جب کہ 7 سعودی شہری اب بھی مذکورہ قید خانے میں موجود ہیں۔