شامی جمہوری فورسز کی الرقہ میں داعش کے خلاف نئی مہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکا کے حمایت یافتہ شامی کرد اور عرب جنگجوؤں پر مشتمل اتحاد نے داعش کے زیر قبضہ شہر الرقہ پر قبضے کے لیے مہم کے ایک نئے مرحلے کا آغاز کیا ہے۔اس کا مقصد اس شہر کا مکمل محاصرہ کرنا اور یہاں سے مشرقی صوبے دیرالزور کی جانب جانے والی شاہراہ کو منقطع کرنا ہے۔

شامی ڈیمو کریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) نے ہفتے کے روز ایک بیان میں کہا ہے کہ ''امریکا کی قیادت میں بین الاقوامی اتحاد کی مدد سے نئی کارروائی کی جارہی ہے۔اس نے ہماری پیش قدمی کو مکمل فضائی کور مہیا کرنے کی ضمانت دی ہے یا پھر خصوصی ٹیموں کے ذریعے میدان جنگ میں ہماری فورسز کی مدد کی جارہی ہے۔

ایس ڈی ایف نے نومبر میں الرقہ پر قبضے کے لیے مختلف مراحل پر مشتمل اپنی مہم کا آغاز کیا تھا۔اس کے ایک کمانڈر نے برطانوی خبررساں ادارے رائیٹرز کو بتایا ہے کہ ان کی فورسز نے اس نئے مرحلے میں چند کلومیٹر تک پیش قدمی کی ہے۔اس کا مقصد صوبہ دیرالزور کی جانب جانے والی شاہراہ سمیت شہر کے مشرق میں واقع علاقے پر قبضہ کرنا ہے۔

داعش کا شام کے صوبے دیرالزور کے تمام علاقوں پر قبضہ ہے۔اس صوبے کی سرحد عراق تک پھیلی ہوئی ہے۔ امریکا کے سیکڑوں فوجی بھی شمالی شام میں ایس ڈی ایم کی کارروائیوں میں مدد دے رہے ہیں۔فرانس نے گذشتہ سال جون میں کہا تھا کہ اس کے فوجی اسی علاقے میں باغیوں کی داعش کے خلاف لڑائی میں رہ نمائی کررہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں