.

شامی حزبِ اختلاف کے پینل کا الریاض میں مشاورتی اجلاس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی حزب اختلاف کی اعلیٰ مذاکراتی کمیٹی کا ایک اجلاس اتوار کے روز سعودی دارالحکومت الریاض میں ہورہا ہے۔اس میں جنیوا میں اقوام متحدہ کی میزبانی میں ہونے والے مذاکرات کی تیاریوں پر غور متوقع تھا۔

اس اجلاس سے قبل شامی حزب اختلاف کے ذرائع نے بتایا ہے کہ وہ مسلح دھڑوں کے ساتھ رابطے کے ذریعے ایک مذاکراتی وفد تشکیل دینے کے لیے کام کررہے ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ مذاکراتی وفد میں کرد شامل نہیں ہوں گے۔

قبل ازیں بدھ کو شامی حزب اختلاف کی مرکزی تنظیم نے اقوام متحدہ کی جانب سے اپوزیشن کے مندوبین کے از خود انتخاب کو مسترد کردیا تھا اور اس کا کہنا تھا کہ اس کے لیے یہ بات بالکل ناقابل قبول ہے کہ جنیوا میں آیندہ امن مذاکرات کے لیے عالمی ایلچی ان کے وفود کا انتخاب کریں۔

شام کی مسلح حزب اختلاف نے الگ سے کہا تھا کہ کسی باہر کے شخص کو مذاکرات میں شامی حزب اختلاف کے نمائندے کے طور پر منتخب نہیں کیا جاسکتا ہے۔اس کا کہنا تھا کہ اس طرح انتقال اقتدار کا عمل شروع ہونے کی راہ ہموار ہوگی اور نہ کوئی عبوری باڈی تشکیل پاسکے گی۔

واضح رہے کہ اقوام متحدہ کے زیراہتمام جنیوا میں ہونے والے شام امن مذاکرات 20 فروری تک مؤخر کیے جاچکے ہیں۔پہلے سے طے شدہ شیڈول کے مطابق یہ مذاکرات 8 فروری کو جنیوا میں شروع ہونا تھے لیکن روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے گذشتہ ہفتے یہ اعلان کیا تھا کہ ان میں تاخیر کردی جائے گی مگر انھوں نے اس کی کوئی وجہ نہیں بتائی تھی۔