القاعدہ : ارویٰ بغدادی، اس کے بیٹے اور بھائی کی ہلاکت کی تصدیق

29 جنوری کی شب یمن میں امریکی فوج کی کارروائی میں 14 جنگجوؤں کی ہلاکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں القاعدہ کے مقامی رہ نما قاسم الریمی نے ایک صوتی بیان میں کہا ہے کہ سعودی عرب میں زیرحراست القاعدہ جنگجو سالم الشریف کی اہلیہ اور سعودی سیکیورٹی فورسز کو مطلوب شدت پسند خاتون ارویٰ البغدادیٰ، اس کا بیٹا اسامہ اور بھائی عصام طاہر بغدادی المعروف ابو بکر البغدادی ہلاک ہوچکے ہیں جب کہ اس کا ایک بیٹا اور بہو زخمی ہوئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق القاعدہ کمانڈر الریمی کا یہ بیان تنظیم کے میڈیا سیل’الملاحم فاؤنڈیشن‘ نے جاری کیا ہے اور اس میں انھوں نے سعودی عرب میں گرفتار سالم الشریف سے اس کی اہلیہ، بیٹی اور ایک دوسری عزیزہ کی ہلاکت پر تعزیت کی ہے۔

خیال رہے کہ امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اقتدار سنبھالنے کے بعد پہلی بار امریکی فوج نے یمن کے قصبے ’یکلا‘ میں رات کی تاریکی میں کمانڈو ایکشن کے دوران القاعدہ کے متعدد جنگجو قتل کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔ یہ کارروائی 29 جنوری کی رات کی گئی تھی۔

الریمی کے بیان میں کہا گیا ہے کہ امریکی فوج کی چھاپا مار کارروائی کے دوران القاعدہ کے 14 جنگجو اور بچوں سمیت 11 خواتین جاں بحق ہوئی ہیں۔ مقتولین میں عبدالرؤف الذھب، سلطان الذھب، ابو برزان القیفی، اس کا والد عبداللہ، ابو بکر البغدادی(انس طاہر) احمد الزوبہ، ابو نوح القیفی ، اس کا چچا، حمزہ السودانی، مقداد الدمتی، حنین الصنعانی، ابو عبداللہ الصنعانی، ابو سیف الجوفی اور سعودی نژاد ابو للیچ الصنعانی شامل ہیں۔

خواتین میں ارویٰ البغدادی، مبخوت علی العامری، بچہ عبدالالہ الذھب، انور العولقی کی بیٹی، فہد القیفی کی بیٹی، ابو عبداللہ الخضرمی کے تین بیٹے، اسامہ الشریف، مرسل العکمہ اور ابن انس عصام طاہر البغدادی شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں