شام : ادلب شہر پر فضائی حملوں میں 15 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں باغیوں کے زیر قبضہ شمال مغربی شہر ادلب پر فضائی حملوں میں پندرہ افراد ہلاک اور بیسیوں زخمی ہوگئے ہیں۔

شامی کارکنان کے مطابق منگل کے روز شہر کے رہائشی علاقوں پر آٹھ فضائی حملے کیے گئے ہیں اور روس کے لڑاکا جیٹ نے یہ بمباری کی ہے۔ شہری دفاع کے ایک رضا کار اعصام الادلبی نے بتایا ہے کہ ابھی تباہ شدہ عمارتوں کے ملبے سے لاشیں نکالی جارہی ہیں اور ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔ان کا کہنا تھا کہ فضائی حملوں میں زیادہ تر عام شہری ہلاک ہوئے ہیں۔

دو عینی شاہدین کا بھی کہنا ہے کہ بمباری اور اس کی تباہ کاریوں سے اندازہ ہوتا ہے کہ یہ روس نے فضائی حملے کیے ہیں۔تاہم روس نے فوری طور پر اس حوالے سے کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔

روس نے ستمبر 2015ء میں شامی صدر بشارالاسد کی حمایت میں فضائی مہم کے آغاز کے بعد سے صوبہ ادلب کے شہروں اور قصبوں پر سیکڑوں فضائی حملے کیے ہیں لیکن شامی کارکنان کا کہنا ہے کہ دسمبر میں ترکی اور روس کی ثالثی میں جنگ بندی کے آغاز کے بعد سے اس کے حملوں کی تعداد بھی کم ہوگئی ہے۔

امریکا کی قیادت میں اتحاد کے لڑاکا طیاروں نے بھی صوبہ ادلب کے دیہی علاقوں پر متعدد حملے کیے ہیں۔ ان علاقوں پر القاعدہ سے ماضی میں وابستہ النصرۃ محاذ کی قیادت میں جیش الفتح اتحاد کے جنگجوؤں کا قبضہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں